اسلام آباد (18نومبر2019)

پاکستان پیپلز پارٹی کے کور کمیٹی کے رکن سینیٹر تاج حیدر نے وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ فوری طور پر جہاز کے ذریعے ٹڈی دل سے متاثر ہونے والے علاقوں پر دواﺅں کا سپرے کرائے۔ یہ بیان انہوں نے اس خبر کے بعد دیا کہ جس میں کہا گیا ہے کہ تھر کے تمام اضلاع میں لاکھوں کی تعداد میں ٹڈی دل نے دوبارہ حملہ کر دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت جتنے بھی اقدامات کر سکتی تھی اس نے کئے لیکن وفاقی حکومت اور وفاقی حکومت کی وزارت غذائی تحفظ ٹس سے مس نہ ہوئی اور اس نے ٹڈی دل کی روک تھام کے لئے کچھ نہیں کیا۔ انہوں نے کہا کہ ٹڈی دل پچھلے چھ ماہ سے سندھ اور جنوبی پنجاب کے علاقے میں حملہ آور ہے جس سے اب تک کپاس کی چالیس فیصد اور اس کے ساتھ دوسری اجناس کی فصلیں بھی نقصان اٹھا چکی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ شہید محترمہ بینظیر بھٹو کی حکومت کے دور میں جب ٹڈی دل کا حملہ ہوا تھا تو انہوں نے متحدہ عرب امارات اور ایران سے چھڑکاﺅں کرنے والے جہاز منگوا کر صرف تین روز میں ٹڈی دل کا صفایا کر دیا تھا۔ اس زمانے میں چھڑکاﺅں کرنے والے صرف تین جہاز ہوا کرتے تھے اور اب چھڑکاﺅں کرنے والے صرف تین جہاز موجود ہیں لیکن ان کے لئے اب کیڑے مار دوائیں میسر نہیں ہیں کیونکہ گزشتہ چھ ماہ سے یہ دوائیں خریدنے کے لئے وفاقی حکومت سے درخواست کی گئی لیکن اب تک اس کی منظوری نہیں دی گئی۔ انہوں نے کہا کہ ٹڈی دل جہاں اتر جاتی ہے وہاں وہ انڈے دیتی ہے جو انڈے بعد میں لاکھوں مزید ٹڈی دل پیدا کرتے ہیں اور اس طرح سے یہ چکر جاری رہتا ہے۔ انہوں نے وفاقی حکومت سے کہا ہے کہ وہ غیرسنجیدگی ختم کرکے اقدامات کرے اور فوری طور پر ٹڈی دل کے علاقے میں اسپرے کروائے۔