اسلام آباد (11دسمبر2019)

پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے سابق صدر آصف علی زرداری کی اسلام آباد ہائی کورٹ کی جانب سے طبی بنیادوں پر ضمانت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ جو نئی میڈیکل رپورٹ آئی ہے اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ صدر آصف علی زرداری کی طبیعت نہایت ناساز ہے اور انہیں جلد سے جلد صحت کی سہولیات فراہم کی جائیں گی۔ انہوں نے کہا کہ آج آصف علی زرداری کی طبی بنیادوں پر ضمانت اور لاکھوں کارکنوں اور نیک خواہشات رکھنے والے عوام کی دعاﺅں کی بدولت ہوئی ہے اور اب آصف علی زرداری کو جلد سے جلد علاج معالجہ فراہم کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ آج انہیں عدالت سے انصاف ملا ہے اور ان کے والد کو طبی بنیادوں پر ضمانت مل گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اور نیب نے گٹھ جوڑ کرکے آصف علی زرداری کی زندگی کو داﺅ پرلگانے کی کوشش کی تھی۔ انہوں نے کہا کہ فریال تالپور کے معاملے میں بھی نیب آج مطلوبہ کاغذات لے کر نہیں آیا اور اب ہمیں 16 دسمبر تک انتظار کرنا پڑے گا۔ نیب اور یہ حکومت سمجھتے ہیں کہ ہم پر دباﺅ ڈال سکتے ہیں تو یہ ان کی بھول ہے۔ بہت جلد آصف علی زرداری کی طبیعت ٹھیک ہو جائے گا اور جیسا کہ آپ سب جانتے ہیں کہ وہ ایک بہت بڑے شکاری ہیں اور اب وہ کھلاڑی کے شکار پر نکلیں گے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پاکستان کے عوام کی یہ خواہش ہے کہ ایک نااہل اور سلیکٹڈ حکومت جس نے ہماری معیشت، سیاست اور سب چیزوں کو تباہ کرکے رکھ دیا ہے اسے جانا پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ یہ ان کا سیاسی بیان ہے کہ یہ سال اس حکومت کا آخری سال ہے اور اگلے سال ہم ایک عوام دوست حکومت بنا کر عوام کے مسائل حل کریں گے۔