سلام آباد(2 جنوری 2020) آرمی ایکٹ میں ترمیم کا معاملہ، تین رکنی حکومتی وفد پاکستان پیپلزپارٹی کی قیادت سے ملاقات کے لئے زرداری ہاو ¿س پہنچا، وفد کی سربراہی وفاقی وزیر پرویز خٹک کررہے تھے جبکہ وفد میں قاسم سوری اور علی محمد خان شامل تھے، حکومتی وفد نے پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کو آرمی ایکٹ کے حوالے سے قانون سازی سمیت اس سے متعلقہ صورت حال پر بریفنگ دی، پاکستان پیپلزپارٹی کی جانب سے ملاقات کرنے والوں میں راجہ پرویزاشرف، نیربخاری، شیری رحمان، رضا ربانی، شازیہ مری اور نوید قمر بھی شامل تھے، پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے اس بات پر تشویش کا اظہار کیا کہ آرمی ایکٹ پر ممکنہ قانون سازی کے تناظر میں پارلیمانی قواعد وضوابط پر عمل نہیں کیا جارہا، پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے حکومتی وفد کے اراکین سے کہا کہ آرمی ایکٹ پر قانون سازی کے سلسلے میں پارلیمانی قواعد و ضوابط کو بروئے کار لایا جائے، پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے سماجی رابطے کی ایک ویب سائٹ پر اپنے پیغام میں کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی جمہوری قانون سازی کو مثبت طریقے سے کرنا چاہتی ہے جبکہ کچھ سیاسی جماعتیں قانون سازی کے قواعد و ضوابط کو بالائے طاق رکھنا چاہتی ہیں، پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین کا کہنا تھا کہ جتنی اہم قانون سازی ہے، اتنا ہی اہم ہمارے لئے جمہوری عمل کی پاسداری ہے، انہوں نے بتایا کہ پاکستان پیپلزپارٹی اس معاملے پر دوسری سیاسی جماعتوں کو بھی اعتماد میں لے گی۔

— اسلام آباد(31 دسمبر2019) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے پوری قوم کو نئے سال کی مبارکباددیتے ہوئے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ نیا سال ملک میں عوامی راج کا سال ہوگا۔ اپنے ایک پیغام میں چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ موجودہ حکومت کی ناقص اور متعصبانہ پالیسیوں کی وجہ سے ملک کے عوام مشکلات کا شکار رہے ہیں اور دو وقت کی روٹی کے لئے مجبور ہو چکے ہیں جبکہ یہ حکومت امیروں کو فائدہ پہنچا رہی ہے۔ موجودہ حکومت کی غیرانسانی پالیسیوں کی وجہ سے آٹھ لاکھ لوگ غربت کی لکیر سے پیچھے جا چکے ہیں اور افراط زر کی وجہ سے مزید لوگ غربت میں ڈوب جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس ظالم حکومت نے 10لاکھ غریب خواتین کو بی آئی ایس پی سے نکال دیا ہے اور یہ حکومت غریب ترین لوگوں کے لئے عذاب بن چکی ہے۔ انہوں نے اس بات کو بھی نوٹ کیا کہ گزرجانے والے سال کے دوران بھارت نے مقبوضہ کشمیر کو دنیا کی سب سے بڑی جیل میں تبدیل کر دیا ہے۔ کشمیری عوام کے بنیادی حقوق کو دن کی روشنی میں روندا جا رہا ہے اور پاکستان پیپلزپارٹی اس مسئلے کو دنیا بھر میں ہر پلیٹ فارم پر اٹھائے گی۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ آئندہ سال دنیا بالآخر مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج کی ذیاتیوں پر نظر ڈالے گی۔ انہوں نے اس کے ساتھ یہ بھی کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی 2020ءمیں کشمیریوں کے حق خودارادیت کے لئے لڑے گی۔