پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ وہ مستحق افراد کی امداد کے حوالے سے کوئی کوتاہی برداشت نہیں کریں گے، انہوں نے سندھ حکومت کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ یہ ان کی ذمہ داری ہے کہ کوئی ایک مستحق بھی کہیں بھوکا نہ رہ جائے، ان خیالات کا اظہار چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے بلاول ہاو ¿س کراچی میں یومیہ اجرت پر انحصار کرنے والوں کی امداد کے میکنزم کے حوالے سے اجلاس کی سربراہی کرتے ہوئے کیا، اجلاس میں وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ، ناصر شاہ، امتیاز شیخ اور مرتضی وہاب نے براہ راست جبکہ سعید غنی اور حارث گزدر نے وڈیو لنک کے ذریعے شرکت کی، اتوار کے روز سندھ کی قیادت کی امدادی سرگرمیوں کے حوالے سے طویل مشاورت میں مستحق افراد کی نشان دہی اور ان تک رسائی کی منصوبہ بندی پر تفصیلی گفتگو کی گئی، چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کو سندھ کے وزیراعلی مراد علی شاہ نے اس حوالے سے حکومت کی کارکردگی سے آگاہ کیا، اس موقع پر چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے سندھ حکومت کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ وہ ایک ایک مستحق کے گھر پہنچے اور راشن پہنچائے، اس موقع پر انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ اس وقت ایک ایسا نظام بنانا ہوگا کہ حکومت ، فلاحی ادارے اور مخیر حضرات ایک پلیٹ فارم سے مستحقین کی مدد کریں، اس ضمن میں چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے سندھ حکومت کو ہدایت دی کہ وہ فوری طور پر مخیر حضرات اور فلاحی اداروں کے ذمہ داران سے مشترکہ لائحہ عمل طے کرنے کے لئے مشاورت کرے، چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے مخیر حضرات اور فلاحی اداروں کے ذمہ داران سے کہا کہ سندھ حکومت نے مستحق افراد کی امداد کا انتہائی مو ¿ثر اور ایک بہترین نظام بنایا ہے، اس لئے مستحق افراد کی مدد کیلئے وہ سندھ حکومت کے بازو بنیں، انہوں نے کہا کہ مخیر حضرات اور فلاحی ادارے سندھ حکومت کے بازو بن کر زیادہ مو ¿ثر ثابت ہوسکتے ہیں، اس موقع پر چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے یہ بھی کہا کہ اگر کوئی اپنے پڑوسی کی مدد کرسکتا ہے تو وہ بھی اس سخت وقت میں اپنا حصہ ڈالے، اسی طرح اگر آپ کسی ایک شخص کی مدد کرسکتے ہیں تو آگے بڑھیں اور اس بحران میں اپنا کردار ادا کریں، چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کے مطابق کرونا وائرس کے بحران سے ہم سب کو مل کر لڑنا ہوگا اور اسی طرح اس بحران کا سامنا کیا جاسکتا ہے، چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے اجلاس میں موجود سندھ حکومت کی کابینہ کے افراد کو کہا کہ لاک ڈاو ¿ن کا عمل طویل ہونے کی صورت میں سندھ حکومت کے پاس مکمل منصوبہ بندی ہونا چاہئیے، انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ لاک ڈاو ¿ن پر مکمل عمل درآمد کریں کیونکہ لاک ڈاو ¿ن پر مکمل عمل درآمد کے ذریعے ہی کرونا وائرس کی وبا کا مقابلہ کیا جاسکتا ہے، اس موقع پر چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ ان کے نزدیک سب سے اہم اپنے عوام کی زندگیوں کو محفوظ بنانا ہے، انہوں نے سندھ حکومت کو ہدایت کی کہ سندھ میں کرونا سے مشتبہ افراد کی زیادہ سے زیادہ اسکریننگ کا عمل جاری رکھا جائے تاکہ ہم زیادہ سے زیادہ زندگیوں کو محفوظ بناسکیں، انہوں نے کہا کہ کرونا ایمرجنسی سینٹرز اور اسپتالوں میں ہمارے ڈاکٹرز بہترین کام کررہے ہیں، وہ ڈاکٹرز اور دیگر طبی عملے کو ان کی خدمات پر سلام پیش کرتے ہیں۔