پاکستان پیپلز پارٹی کی مرکزی ڈپٹی سیکریٹری اطلاعات پلوشہ خان نے کہا ہے کہ سلیکٹڈ وزیراعظم کے بعد ان کے معاون خواہ مخواہ بھی مشکوک نکلے ہیں جبکہ ان معاون خوامخواہ کے پاس اربوں کے اثاثے بھی سوالیہ نشان ہیں۔ ضروری ہوگیا ہے کہ تمام معاون خوامخواہ سے منی ٹریل طلب کی جائے۔ معاون خواہ مخواہ عمران خان کے اے ٹی ایم ہیں اور عمران خان کی کرپشن میں فرنٹ مین کا کردار ادا کر رہے ہیں۔ شہزاد اکبر سے لے کر شہباز گلِ تک پراسرار انداز میں نمودار ہوئے اور انہیں اہم عہدوں پر فائز کیا گیا۔ پلوشہ خان نے کہا کہ عمران خان کی دولت کی ہوس کیری پیکر ٹیم میں شمولیت سے ظاہر ہوتی ہے کیونکہ عمران خان نے پاکستان کرکٹ بورڈ کو لات مار کر کیری پیکر ٹیم کا حصہ بنے۔ پلوشہ خان نے کہا کہ پی ٹی آئی گملے میں اگائی ہوئی سیاسی پارٹی دوسال کے اندر سکڑ گئی جبکہ سیاسی خانہ بدوش اب سیاسی یتیم بن چکے ہیں ۔ پلوشہ خان نے کہا کہ عمران اینڈ اے ٹی ایم ٹڈی دَل بن کر مل کی معیشت کو تباہ اور عوام کا خون چوس رہے ہیں۔ پلوشہ خان نے کہا کہ قومی خزانے پر پلنے والے معاون خواہ مخواہ ملک پر عوام پر بوجھ ہیں۔