پاکستان پیپلز پارٹی کی مرکزی ڈپٹی سیکریٹری اطلاعات پلوشہ خان نے وزیراطلاعات شبلی فراز کی پریس کانفرنس پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ شبلی فراز کی زبان سے سلیکٹڈ وزیراعظم کا سندھ سے بغض ، نفرت اور تعصب نظر آرہا ہے۔ کراچی والے سن لیں کہ عمران خان کی کراچی والوں سے ہمدردی کی بیان بازی مگرمچھ کے آنسو ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک کو سب سے زیادہ ٹیکس ریونیو سندھ دیتا ہے۔ حالیہ بارشوں نے پورے سندھ کو تباہ کر دیا ہے مگر وفاق کی طرف سے متاثرہ سندھ کے لئے مالی پیکیج سے صاف انکار انتہائی شرمناک ہے۔ پلوشہ خان نے کہا کہ شبلی فراز سندھ سے تعصب کی عینک اتار کر دیکھیں ، انہیں عوامی حکومت کے ترقیاتی کام صاف نظر آئیں گے۔ شبلی فراز کو چاہیے کہ اپنی حکومت سے کہے کہ بی آرٹی پرسٹے آرڈر کی درخواست واپس لیں جس روز بی آرٹی پر سٹے آرڈر ختم ہوا تو بی آرٹی کا ایک ایک انچ نیازی اینڈ کمپنی کی کرپشن کی گواہی دے گا۔ پلوشہ خان نے کہا کہ FATF کے حوالے سے عمران اینڈ کمپنی قوم سے جھوٹ بول رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان نے ہی لوگوں کو ھنڈی کے ذریعے رقم کی منتقلی کے لئے اکسایا تھا اور اب انہوں نے ایمنسٹی کے ذریعے اپنے ساتھیوں کو کالے دھن کو سفید دھن کرنے کا موقع دیا ہے اور ان سے دولت کے متعلق کسی سوال و جواب کو بھی ممنوع قرار دیا ہے۔ پلوشہ خان نے کہا کہ کون نہیں جانتا کہ عمران خان اور علیمہ خان غیرقانونی ذرائع کے ذریعے شوکت خانم کے فنڈز بیرون ملک منتقل کرکرے ملکیتیں خریدتے رہے ہیں۔