چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کے ترجمان سینیٹر مصطفی نواز کھوکھر نے مطالبہ کیا ہے کہ وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے اطلاعات جنرل ریٹائرڈ عاصم سلیم باجوہ پر لگنے والے الزامات کی تحقیق کرائی جائیں۔ وزیراعظم کے معاون اور چیئرمین سی پیک کے سنجیدہ مالی اسکینڈل پر حکومت کی خاموشی اور اس پر کچھ نہ کرنا حیران کن ہے۔ بلاول بھٹو زرداری کے ترجمان نے کہا کہ صحافی احمد نورانی کی خبر میں عاصم سلیم باجوہ کے ظاہر نہ کردہ اثاثوں اور کاروبار کا انکشاف کیا گیا ہے۔ وزیراعظم کے معاون کے ظاہر کردہ اثاثوں اور انکشاف میں سامنے آنے والے اثاثوں اور کاروبار میں تضاد ہے۔ سینیٹر مصطفی نواز کھوکھر نے کہا کہ حکومت نام نہاد احتساب پر اتراتی ہے اس لئے اس معاملے میں بھی کارروائی کرنا چاہیے تھی۔ حکومت اپنے دکھاوے کے احتساب کے بیانیہ کے برعکس اس معاملے پر مکمل خاموش ہے۔ چیئرمین پیپلزپارٹی کے ترجمان نے کہا کہ عاصم سلیم باجوہ کے اثاثوں اور کاروبار کے متعلق انکشافات حکومت اور نیب کے لئے امتحان ہے۔ جس پھرتی کا مظاہرہ اپوزیشن کے احتساب کے وقت کیا جاتا ہے معاون خصوصی کے معاملے میں بھی وہی پھرتی دکھائی جانی چاہیے تھی۔ انہوں نے کہا کہ عاصم سلیم باجوہ پر عائد الزامات سنگین نوعیت کے ہیں اس لئے ضروری ہے کہ ان کی تحقیقات کی جائے۔ اپوزیشن تو شروع سے ہی کابینہ کے غیرمنتخب اراکین کے اثاثوں کی تحقیقات کا مطالبہ کرتی آئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ معاون خصوصی سمیت تمام غیرمنتخب حکومتی عہدیداروں کو منتخب اراکین کی طرح احتساب کا سامنا کرنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ غیر منتخب معاونین کے مالی امور کی شفاف تحقیقات ہوں تو بڑے انکشافات ہوں گے