چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے آج ہنزہ کے شھر ناصر آباد میں عوام کے ایک بڑی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کے مین بابا جان کی سرزمین پر آیا ہوں میرا وادا ہے کے میں بابا جان کو بھی انصاف دلاﺅن گا اور پی ایس ایف کے احمد ممتاز کو انصاف لگاﺅں گا جس کو مشرف دور میں ملٹری کورٹ نے سزا سنائی تھی۔ چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا کے پیپلزپارٹی گلگت بلتستان کے عوام کو آئینی حقوق دیگی حق حقرانی دیگی حق ملکیت دیگی اور حق روزگار بھی دیگی. انہوں نے کہا کے آپ کی خدمت کرنے والے اور آپ کے حقوق دینے والے شہید ذوالفقارعلی بھٹو کو پھانسی دیدی گئی شہید محترمہ بینظیر بھٹو کو بھی شہید کیا گیا اور آپ کو اپنانا صوبہ اور شناخت دینے والے آصف علی زرداری کو 11 سال جیل میں رکھا گیا تھا ہم جمہوری لوگ ہیں جمہوریت پر یقین رکھتےہیں ہم دھمکیوں سے نہیں ڈرتے اس دھرتی پر بسنے والوں سے ہمارا تین نسلوں کا تعلق ہے جو کبھی نہیں ٹوٹے گا۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کے کچھ لوگ صوبہ دینے کے جھوٹے نعرے کی آڑ میں آپ سے سبسڈی چھیننا چاہتے ہیں آپ پیپلز پارٹی کو ووٹ دیکر کامیاب کریں پیپلزپارٹی ان کے سامنے دیوار بن کر رہے گی اور آپ کے حقوق غزب ہونے نہیں دیگی. اس سے قبل چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری جب ہنزہ کے شہر ناصر آباد داخل ہوئے تو کئی مقامات پر ان کا شاندار استقبال کیا گیا دونو کناروں پر کھڑی لوگوں نے پھولوں کی پتیاں نچھاور کرکے ان کا استقبال کیا پیپلزپارٹی کے سینیٹر شیری رحمان، سینیٹر مصطفی نواز کھوکھر اور فیصل کریم کنڈی بھی چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کے ہمراہ تھے۔ چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کے یے افسوس کی بات ہے کے گلگت بلتستان والے سی پیک کے دروازے پر کھڑے ہوکر سوال کر رہے ہیں کہ سی پیک کہاں ہے؟ اتوار کے روز یہاں ایک دوسرے بہت بڑے اجتماع گلمد گوجال جس میں سیکڑوں کی تعداد میں عورتیں بھی شامل تھیں سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کے آپ کے حق کیلئے شہید قائد عوام ذوالفقار علی بھٹو اور محترمہ بینظیر بھٹو شہید نے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا ہے اس لیئے روڈ نہیں تو ووٹ نہین ہے کی سوچ مناسب نہیں ہے آپ اپنے ووٹ کا ضرورت استعمال کریں تاکہ آپ کا حقیقی نمائندہ آپ کے مسائل حل کرے آپ پیپلزپارٹی کو ووٹ دیں آپ مجھے ووٹ دیں آپ شہید محترمہ بینظیر بھٹو کو ووٹ دیں آپ کے تمام مسائل ہم حل کروائیں گے۔ انہوں نے کہا کے یہاں کوئلی کی شدید ضرورت ہے اس لیئے میں حکومت سندھ سے بات کر کے تھر کول سے سستا اور معیاری کوئلا دلاﺅن گا.۔ انہوں نے کہا کے گلگت بلتستان کا میرا یے تیسرا دورا ہے میں گلگت بلتستان کے چپی چپی کورا کیا ہے اس لیے یہاں کے عوام کے مسائل کا بخوبی واقف ہوں۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کے ہمارا آپ سے تین نسلوں کا ساتھ ہے شہید ذوالفقارعلی بھٹو کا نواسا اور شہید بی بی کا بیٹا آپ سے ساتھ نبھائیں گے اس موقع پر آزاد امیدوار حاجت محمد نے پیپلزپارٹی کے امیدوار کے حق میں دستبردار ہو کر پیپلزپارٹی میں شمولیت اختیار کی اس سے قبل ہنزہ کا روایتی لباس پہنے ننھی بچیوں نے آیا شہید بی بی کی نشانی آیا ہے بلاول چھایا ہے بلاول کے نغمہ پر ٹیبلو پیش کیا۔ اس موقع پر پیپلزپارٹی گلگت بلتستان کے صدر امجد حسین ایڈووکیٹ سینیٹر شیری رحمان، سینیٹر مصطفی نواز کھوکھر ,ڈاکٹر نفیسہ شاہ فیصل کریم کنڈی، حسن مرتضی،ڈاکٹر کریم خواجہ، شاہین کوثر ڈار، سادیہ دانش، ہدایت اللہ خان،نایاب لغاری بھی ان کے ہمراہ تھے۔ چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے علی آباد کے اجتماع میں کہا ہے کے شہید ذوالفقارعلی بھٹو گلگت بلتستان سے عوام دشمن راجگیری اور ایف سی آر کا خاتمہ کیا تھا شہید محترمہ بینظیر بھٹو نے سیاسی اور جمہوری آزادی دے اور کونسل منتخب کرنے کا اختیار دیا صدر آصف علی زرداری گلگت بلتستان کے عوام کو شناخت دے اور اسمبلی منتخب کرنے کا اختیار دیا آپ کو اپنے ہی صوبہ کا گورنر دیا اور اب شہید بھٹو کا نواسا اور شہید بی بی کا بیٹا اس بے نور سر زمین کو آئینہ کا نور دیگا جو آپ کا اپنا آئیں ہوگا۔ علی آباد میں ایک بڑی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کے جو لوگ گلگت بلتستان کے عوام سے سبسڈی چہین نا چاہتے ہیں وہ کان کول کر سنے لیں کے بھٹو کا نواسا اور شہید بی بی کا بیٹا یے سبسڈی چہین نے نہیں دیگا پہلے 70 سال کی نا انصافیون کا ازالا کرو۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کے گ گلگت بلتستان کا میرا یے تیسرا دورا ہے میں گلگت بلتستان کے چپی چپی پر گیا ہو اور عوام کا دروازہ کھٹکھٹایا ہے، آپ سے ملے کر آپ کو حق حاکمیت دلاﺅن گا حق ملکیت دلاﺅن گا اور گلگت بلتستان کے معدنیات کا مالک بنا ﺅن گا۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کے پیپلزپارٹی چاہتی ہے کے آپ کی قومی اسمبلی اور سینیٹ میں بھی نمائندگی ہو گلگت بلتستان سے منتخب نمائندے بھی وزیراعظم کا انتخاب کریں ملکی عمور میں بھی ان کی مشاورت شامل ہو۔ عمران خان کو تنقید کا نشانا بتاتے ہوئے کہا کے یے شخص پورے ملک کی طرح گلگت بلتستان میں بھی تباہی کرنا چاہتا ہے،ان کا ایک گندا وزیر یہاں گندی زباں استعمال کر رہا ہے خواتین کیلئے بھی گندی زباں استعمال کرتا ہے چیئرمین پیپلز پارٹی نے حاضرین سے سوال کیا کے کیا یے ہنزہ کی تہذیب ہے؟ کیا یے گلگت بلتستان کی ثقافت ہے جس پر حاضرین نے نہیں نہیں کو جواب دیا۔ چیئرمین پیپلز پارٹی نے مزید کہا کہ سی پیک کے حوالی سے بہت پڑی دعویدار ہیں مگر سی پیک کا منصوبہ صدر آصف علی زرداری کا ہے اس منصوبہ کا بنیادی نقشہ میں بلوچستان،فاٹا اور گلگت بلتستان تھا انہو نے کہا کے ہنزہ ملک کا سرحدی علاقہ ہے اس کے زیادہ حقوق ہیں۔ چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا کے پی ٹی ڈی سی کو نجکاری کی آڑ میں ہتھیارا جارہاہے ہزاروں ملازمین کو نوکریوں سے محروم کر دیا گیا ہے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کے پی ٹی ڈی سی کو ختم ہونے نہیں دیا جائے گا پیپلز پارٹی وفاق میں اقتدار میں آکر برطرف ملازمین کو دوبارہ بہال کرے گی انہوں نے کہا کے دیا میر کے لوگ دیا میر کے لوگوں سے نا انصافی ہورہی ہے دیامر ڈیم منصوبہ میں انہیں ملازمتوں سے محروم رکہا جارہا ہے جو سراسر نا انصافی ہے سندھ میں تھر کول منصوبہ میں 70 فیصد مقامی افراد کو ملازمتیں دیے گئی ہیں 20 فیصد صوبہ سندھ اور جب کے 10 فیصد ملک کے باقی صوبوں کیلئے مختص ہیں۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کے 15 نومبر کو انتخابات جیتنے کے بعد تمام سرکاری ملازمین کی تنخواہ میں اضافہ کیا جائے گا اور عارضی ملازمین کو مستقل کیا جائے گا اور رٹائیرڈ ملازمین کی پینشن میں بھی اضافہ کیا جائے گا نوجوانوں کو ملازمتیں دیے جائیں گی جس میں خواتین کا بھی حصہ ہوگا جب کے پیپلز پارٹی وفاق میں اقتدار میں آکر یہان کے عوام کو بڑے پئمانی پر ملازمتیں دیے گی۔