اسلام آباد (24دسمبر 2020) پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کی مرکزی سیکرٹری اطلاعات ڈاکٹر نفیسہ شاہ نے کہا ہے کہ کسی ٹیکس چور کو وزیراعظم بنانا ملک کے لئے بہت بڑا المیہ ہے۔ عمران خان نے ایمنسٹی حاصل کی تھی اس لئے اپنی چوری چھپانے اور خفت مٹانے کے لئے وہ کرپشن راگنی گاتے رہے۔ اپنے ایک بیان میں ڈاکٹر نفیسہ شاہ نے کہا کہ عمران خان میں پیسے کی لالچ کا اندازہ اس بات سے بھی لگایا جا سکتا ہے کہ وہ پی سی بی کو دھوکہ دے کر کیری پیکر ٹیم میں شامل ہوئے تھے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان کے والد کو کرپشن ثابت ہونے پر سرکاری ملازمت سے فارغ کیا گیا تھا۔ اب عمران خان نے کرپشن کے نئے طریقے ایجاد کئے ہیں۔ ڈالر کی اڑان ہو یا آٹا چینی اسکینڈل ، ادویات مہنگی کرنے کا اسکینڈل ہو یا بلین ٹری اسکینڈل، بی آرڈی ہو یا مالم جبہ اسکینڈل کرپشن کے سارے میڈل عمران خان کے سینے اور تاج میں سجے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح ان کے دور میں مشکوک نجکاری بھی کرپشن کی داستان بیان کرتی ہے۔ ڈاکٹر نفیسہ شاہ نے کہا کہ آخر عمران خان کو کس نام سے پکارا جائے، سلیکٹڈ کے نام سے، ٹیکس چور کے نام سے یا کرپشن خان کے نام سے۔ انہوں نے کرپشن کی خاطر ہر اس وزارت جو معیشت سے جڑی ہوئی ہے میں اپنے فرنٹ مین رکھے ہوئے ہیں۔