خبر آرکائیو

پاکستان پیپلزپارٹی کے سابق سیکریٹری اطلاعات سینیٹر تاج حیدر نے ایک بیان میں یہ تجویز دی ہے کہ ڈیم کی تعمیر کے لئے قوم کی جانب سے عطیہ کی گئی رقم کو بلوچستان میں 100 چھوٹے ڈیموں

پاکستان پیپلزپارٹی کے سابق سیکریٹری اطلاعات سینیٹر تاج حیدر نے ایک بیان میں یہ تجویز دی ہے کہ ڈیم کی تعمیر کے لئے قوم کی جانب سے عطیہ کی گئی رقم کو بلوچستان میں 100 چھوٹے ڈیموں کی تعمیر کے تیسرے اور آخری مرحلے کے لئے استعمال کیا جائے۔ سینیٹر تاج حیدر نے کہا ہے کہ دیامیر بھاشا ڈیم کی تعمیر کے لئے پانچ ٹھیکیداروں کی بولیاں موصول ہوگئی ہیں۔ اس ڈیم کی تعمیر کے لئے 1500ارب روپے درکار ہیں جبکہ اس وقت تک ڈیم کی تعمیر کے لئے جو رقم اکٹھی کی گئی ہے وہ صرف ساڑھے تین ارب روپے ہیں جو زیادہ سے زیادہ چھ یا سات ارب تک پہنچ سکتی ہے لیکن یہ رقم دیامیر بھاشا جیسے میگا پروجیکٹ کے لئے کوئی معنی نہیں رکھتی۔ انہوں نے کہا کہ اگر یہ رقم بلوچستان میں قائم کئے گئے 100چھوٹے ڈیموں کے لئے استعمال کی جائے تو اس سے بلوچستان کے دور دراز علاقوں میں رہنے والے عام آدمی کی زندگی پر بہت بہتر اثر پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ اس تجویز سے ایک طرف تو مفلوک الحال عوام کی بہتری ہوگی اور دوسری جانب ملک کے عوام کی جانب سے بلوچستان کے عوام کے لئے اظہار یکجہتی کا اظہار ہوگا۔ اگر کراچی اور لاہور کا ہر بچہ بلوچستان کے دور دراز علاقوں کے عوام کے لئے چھوٹے ڈیموں کی تعمیر میں مدد کرے تو بلوچستان کے عوام کو یہ احساس بھی ہوگا کہ پاکستان کے عوام اور اس کا ہر بچہ بلوچستان کے لوگوں کی بہتری کے لئے سوچتا ہے اور یہ انتہائی مثبت پیغام ہوگا۔

 

 

 

اسلام آباد (12 ستمبر 2018) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے 1983ع میں  تحریکِ بحالی جمہوریت (ایم آر ڈی) کے دوران خیرپور ناتھن شاہ میں آمر ضیاء کے ہاتھوں شہید

اسلام آباد (12 ستمبر 2018) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے 1983ع میں  تحریکِ بحالی جمہوریت (ایم آر ڈی) کے دوران خیرپور ناتھن شاہ میں آمر ضیاء کے ہاتھوں شہید ہونے والے پارٹی کارکنان کی 35 ویں برسی کے موقعے پر انہیں زبردست خراج عقیدت پیش کیا ہے۔  اپنے پیغام میں پی پی پی چیئرمین نے کہا کہ پاکستان میں جمہوریت اور عوامی حقوق کے لیئے پاکستان پیپلز پارٹی کی قیادت و کارکنان کی قربانیاں و جدوجہد ملک ہی نہیں تاریخِ اقوامِ عالم کا قابلِ فخر باب ہے۔ انہوں نے کہا کہ پوری قوم خیرپور ناتھن شاہ کے شہداء کی مقروض ہے اور ان کی عظیم قربانی کو رائیگان ہونے نہیں دیا جائے گا۔ بلاوہل بھٹو زرداری نے کہا کہ شہید محترمہ بینظیر بھٹو کی زیرقیادت لڑی گئی ایم آر ڈی کی تاریخی سیاسی لڑائی کا ہر پہلو آئںدہ نسلوں کے لیئے نصاب کی حیثیت رکھتا ہے۔ انہوں نے تاریخ و سیاسیات کے اساتذہ پر زور دیا کہ وہ اس نظریاتی و فکری جدوجہد سے نئی نسلوں کو آگاہ کرنے میں اپنا کردار ادا کریں۔ واضح رہے کہ 12 ستمبر 1983ع میں ضلع دادو کے شہر خیرپور ناتھن شاہ میں آمر جنرل ضیا کے ہاتھوں پی پی پی کے 12 کارکنان شہید کردیئے گئے تھے۔ شہداء میں عبدالغنی ابڑو، عبدالعزیز لاکھیر، نظام الدین نائچ، عبدالنبی کھوسو، اللہ ورایو لانگاہ، شاہنواز کھوسو، حبیب اللہ لغاری، دیدار علی کھوکھر، ضمیر حسین جاگیرانی، اعجاز حسین کھونھارو اور منظور احمد چانڈیو شامل تھے۔

سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری حکومت سند ھ کو ہدایت کی ہے کہ محرم الحرام میں مذہبی ہم آہنگی کو یقینی بنایا جائے۔

سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری حکومت سند ھ کو ہدایت کی ہے کہ محرم الحرام میں مذہبی ہم آہنگی کو یقینی بنایا جائے۔ امن و امان کو برقرار رکھنے کے لئے شرپسندوں پر کڑی نظر رکھی جائے۔ آصف علی زرداری نے سندھ حکومت کو یہ بھی ہدایت کی کہ ایسے عناصر کو قانون کی گرفت میں لایا جائے جو فتنہ کا باعث بن رہے ہوں۔ امن کو بحال رکھنے کےلئے تمام اداروں کو حرکت میں لایا جائے، قانون شکن عناصر سے کوئی بھی رعایت نہ کی جائے۔ آصف علی زرداری نے کہا کہ مذہبی اور عبادت کی آزادی کو ہر صورت میں برقرار رکھا جائے۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ یومِ دفاع کو شایانِ شان انداز میں منانا یہی ہے

کراچی (5 ستمبر 2018) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ یومِ دفاع کو شایانِ شان انداز میں منانا یہی ہے کہ پاکستان کی سرحدوں، نظریئے اور جمہوریت کی حفاظت کے ساتھ ساتھ ان ہم وطنوں اور سپاہیوں کو شاندار خراج عقیدت پیش کیا جائے جہنوں نے قوم کے تحفظ کی خاطر جامِ شہادت نوش کیا۔ یومِ دفاعِ پاکستان کے موقعے پر اپنے پیغام میں پی پی چیئرمین نے کہا کہ انتھاپسندی و عسکریت پسندی بنیادی خطرہ ہیں اور تمام قوم و اداروں کو دفاعِ وطن کی خاطر ایک پیج پر ہونا ہوگا۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ 6 ستمبر 1965ع وہ دن تھا جب شہری و افواج نے اپنے سے زیادہ طاقتور دشمن بھارت کے خلاف جنگ بڑی بھادری سے لڑی، جس نے اسے جوہری پروگرام شروع اور اسے وسیع کرنے پر مجبور کیا۔ انہوں نے نشاندھی کرتے ہوئے کہا کہ یہ شہید ذوالفقار علی بھٹو ہی تھے، جنہوں نے خطے میں بھارت کے جوھری تسلط آمیز ارادوں کو بھانپ لیا تھا اور انہوں نے سکیورٹی ماحول کا توازن برقرار رکھنے کے لیئے جوھری پروگرام کی بنیاد رکھی تاکہ مستقبل میں پاکستان کو ناقابل تسخیر حیثیت حاصل ہو۔ وزیراعظم شہید محترمہ بینظیر بھٹو ملکی دفاع کو مزید مضبوط بنانے کے لیئے بیلسٹک میزائیل ٹیکنالاجی حاصل کی۔ پی پی پی چیئرمین نے کہا کہ پاکستان کے شہید بیٹوں و بیٹیوں کو ہمیشہ یاد رکھا جائیگا، وہ ہماری تاریخ کے ہیرو ہیں، اور انہیں خراج عقیدت پیش کرنے کے لیئے ہم سلام پیش کرتے ہیں۔

پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے عارف علوی کو پاکستان کا صدر منتخب ہونے پر مبارکباد پیش کرتے ہوئے امید ظاہر کی ہے

پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے عارف علوی کو پاکستان کا صدر منتخب ہونے پر مبارکباد پیش کرتے ہوئے امید ظاہر کی ہے کہ وہ ریاست کے سربراہ کی حیثیت اور وفاق کی علامت کے طور پر آئین کی روح کے مطابق صدر کے فرائض سرانجام دیں گے۔ ایک بیان میں بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی منتخب صدر کو مبارکباد پیش کرتی ہے لیکن اس کے ساتھ ساتھ صدر کی حیثیت سے ان کے کردار پر نظر بھی رکھے گی۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے لیڈران عمران خان اور عارف علوی نے پارلیمان اور شہری ریاست کے اداروں کی حیثیت کو گھٹایا ہے اور ان سے کہا ہے کہ وہ اپنے ماضی کے کردار سے خود کو دور کریں جس کی وجہ سے پارلیمنٹ کی حیثیت کم ہوئی تھی۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پارلیمنٹ کو اس کی حیثیت دینے کے لئے ایک پارلیمانی کمیٹی بنائی جائے جو بلاتاخیر اس بات کی تحقیقات کرے کہ 2018ءکے انتخابات میں کیا بدعنوانیاں ہوئی ہیں۔ انہوں نے منتخب صدر کو یادلایا کہ الیکشن کمیشن کی جانب سے اپ لوڈ کئے ہوئے فارم45کے فارنزک آڈٹ کرائے جائیں اور آرٹی ایس سسٹم کے فیل ہونے کی بھی تحقیقات کرائی جائیں۔ انہوں نے کہا کہ اس معاملے سے زیادہ عرصے تک گریز نہیں کیا جا سکتا۔

 

 

 

پاکستان پیپلزپارٹی کے الیکشن مانیٹرنگ کمیٹی کے مرکزی انچارج تاج حیدر نے اس بات پر سخت تشویش کا اظہار کیا ہے کہ 2018ءکے انتخابات میں پارٹی کے جن امیدواروں نے انتخابات میں بدعنوانی

پاکستان پیپلزپارٹی کے الیکشن مانیٹرنگ کمیٹی کے مرکزی انچارج تاج حیدر نے اس بات پر سخت تشویش کا اظہار کیا ہے کہ 2018ءکے انتخابات میں پارٹی کے جن امیدواروں نے انتخابات میں بدعنوانی کے خلاف قانونی اقدام کیا ہے ان کو دھمکیاں دی جا رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حلقہ NA-249 سے پارٹی کے امیدوار غلام قادر مندوخیل نے پی ٹی آئی کے کامیاب ہونے والے امیدوار کے خلاف سندھ ہائی کورٹ میں اپیل دائر کی ہے کہ پی ٹی آئی کے امیدوار نااہل ہیں اور انہوں نے اپنے کاغذات نامزدگی میں سنجیدہ غلط بیانیاں کی ہیں۔ غلام قادر مندوخیل نے پریزائیڈنگ افسران کے خلاف بھی مقدمات دائر کئے ہیں کہ انہوں نے ان کے پولنگ ایجنٹوں کو یرغمال بنایا اور گنتی کے وقت انہیں کمروں میں بند کر دیا گیا۔ غلام قادر مندوخیل کو مستقل دھمکیاں دی جا رہی ہیں کہ وہ اپنے مقدمات واپس لیں ورنہ انہیں شدید نقصانات پہنچائے جا سکتے ہیں۔ سندھ ہائی کورٹ نے مختلف وفاقی ایجنسیوں کو حکم دیا ہے کہ وہ جیتنے والے امیدوار کی مکمل رپورٹ مہیا کرے۔ تاج حیدر نے اس خدشے کا بھی اظہار کیا کہ یہ ایجنسیاں اپنی رپورٹ میں تاخیر کر سکتی ہیں اور دباﺅ کے تحت غلط رپورٹیں بنا کر پیش کر سکتی ہیں۔ تاج حیدر نے کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی جمہوریت اور آزادانہ اور منصفانہ انتخابات کے لئے ڈٹ کر کھڑی ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ دھمکیاں پارٹی کو ڈرانے میں ناکام ہوں گی اور پارٹی آزادانہ اور منصفانہ انتخابات کے لئے جدوجہد کرتی رہے گی۔

 

پاکستان پیپلزپارٹی نے ایک خط کے ذریعے پیمرا سے کہا ہے کہ وہ غلط اور منگھڑت خبریں نشر کرنے پر چینل 92 کے خلاف خاص طور پر اور دیگر ان تمام چینلوں کے خلاف بھی سخت کارروائی

پاکستان پیپلزپارٹی نے ایک خط کے ذریعے پیمرا سے کہا ہے کہ وہ غلط اور منگھڑت خبریں نشر کرنے پر چینل 92 کے خلاف خاص طور پر اور دیگر ان تمام چینلوں کے خلاف بھی سخت کارروائی کرے جنہوں نے آصف علی زرداری اور ان کی ہمشیرہ فریال تالپور کے ایف آئی اے کے دفتر واقع G-13 اسلام آباد میں پیشی کے موقع پر قطعی غلط اور منگھڑت خبریں نشر کیں۔ پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے سیکریٹری جنرل فرحت اللہ بابر نے پیمرا کے چیئرمین کے نام ایک خط لکھ کر انہیں مطلع کیا کہ چینل 92 نے ایسے خیالی سوالات نشر کئے جو اس کے مطابق آصف علی زرداری اور مس فریال تالپور سے پوچھے۔ یہ بات قطعی غلط ہے کہ زرداری گروپ آف کمپنیز کے متعلق آصف علی زرداری سے سوالات پوچھے گئے۔ آصف علی زرداری کا 2008ءسے زرداری گروپ سے کوئی تعلق نہیں۔ حقیقت یہ ہے کہ اس کیس کی ایف آئی آر میں نہ تو آصف علی زرداری اور نہ ہی فریال تالپور ملزمان ہیں بلکہ یہ دونوں گواہوں کے طور پر پیش ہوئے۔ انہوں نے خط میں مزید لکھا کہ یہ بات بھی قطعی غلط ہے کہ آصف علی زرداری اور فریال تالپور کو کوئی سوالنامہ دیا گیا۔ حقیقت تو یہ ہے کہ سینیٹر فاروق نائیک جو آصف علی زرداری اور فریال تالپور کے فوکل پرسن ہیں کو بھی کوئی سوالنامہ نہیں دیا گیا۔ فرحت اللہ بابر نے مزید لکھا کہ آصف علی زرداری اور فریال تالپور کے متعلق انتہائی غلط تاثر پیدا کیا گیا اور یہ صریحاً میڈیا ٹرائل ہے۔ انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کی آبزرویشن بھی ضمن میں موجود ہے کہ اس قسم کی کوئی رپورٹ جو تحقیقاتی عمل کے مطابق ہونہ تو نشر کی جا سکتی ہے اور نہ شائع ہو سکتی ہے۔ انہوں نے خط میں پیمرا سے کہا ہے کہ وہ چینل 92 اور دیگر چینلوں کے خلاف سخت اور فیصلہ کن ایکشن لے اور انہیں اس قسم کی رپورٹیں نشر کرنے سے روکے۔

سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینزکے صدر آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ 193ءکا آئین غیرمسلم شہریوں کے حقوق کی ضمانت دیتا ہے۔

سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینزکے صدر آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ 193ءکا آئین غیرمسلم شہریوں کے حقوق کی ضمانت دیتا ہے۔ پاکستان پیپلزپارٹی نے ہمیشہ غیرمسلم پاکستانیوں کے حقوق کا دفاع کیا ہے اور ہمیشہ کرتی رہے گی۔ سابق صدر نے کہا کہ سندھ میں پاکستان پیپلزپارٹی کے لئے یہ فخر کی بات ہے کہ غیرمسلم شہریوں کو انتخابات میں حصہ لینے کے لئے ٹکٹ دیا اور وہ بھاری اکثریت اور ریکارڈ ووٹ حاصل کرکے پارلیمنٹ کے ممبر منتخب ہوگئے۔ انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی نے پارلیمان میں غیرمسلم شہریوں کی نشستوں میں اضافہ کیا۔ آصف علی زرداری نے کہا کہ قائدعوام شہید ذوالفقار علی بھٹو اور محترمہ بینظیر بھٹو شہید نے ہمیشہ غیرمسلم ہم وطنوں کے حقوق کا دفاع کیا۔ پاکستان پیپلزپارٹی غیرمسلم ہم وطنوں کے ساتھ ہونے والے امتیازی سلوک کی مذاحمت کرتی رہے گی۔ انہوں نے کہا کہ اس ملک میں سب شہری برابر کے حقوق رکھتے ہیں اوار انہیں مکمل آئینی حقوق کی ضمانت حاصل ہے۔

 

 

چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے پارٹی رہنماﺅں سے مشاورت کے بعد قومی اسمبلی کے اسپیکر کے لئے سید خورشید احمد شاہ کے نام کی منظوری دے دی ہے

چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے پارٹی رہنماﺅں سے مشاورت کے بعد قومی اسمبلی کے اسپیکر کے لئے سید خورشید احمد شاہ کے نام کی منظوری دے دی ہے۔ چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کے ترجمان سینیٹر مصطفی نواز کھوکھر نے کہا ہے کہ پاکستان پیپلزپارٹی مسلم لیگ(ن)، ایم ایم اے، اے این پی اور دیگر سیاسی جماعتوں نے وزیراعظم، اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی کے لئے متفقہ طور پر امیدوار لانے کا فیصلہ کیا تھا۔ فیصلے کے مطابق وزیراعظم کا امیدوار مسلم لیگ(ن) سے ہوگا اورڈپٹی اسپیکر ایم ایم اے سے جبکہ اسپیکر پاکستان پیپلزپارٹی کو ہوگا۔ مصطفی نواز کھوکھر نے کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی دھاندلی زدہ انتخابات پر تمام تحفظات کے باوجود پارلیمنٹ میں بیٹھ کر مقابلہ کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ پی پی پی قیادت نے تمام جمہوری قوتوں کو متحد کیا اور عہد کیا ہے کہ پارلیمنٹ کو مضبوط بنائیں گے۔ سینیٹر مصطفی نواز کھوکھر نے کہا کہ ہم ہر عہدے پر پاکستان تحریک انصاف کے ہر امیدوار کا مل کر مقابلہ کریں گے۔

 

سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری نے پولیس شہدا ڈے پر ایک پیغام میں دہشتگردوں اور امن دشمنوں کی بھرپور مذاحمت کرکے

سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری نے پولیس شہدا ڈے پر ایک پیغام میں دہشتگردوں اور امن دشمنوں کی بھرپور مذاحمت کرکے شہادت پانے والے پولیس جوانوں اور افسروں کو شاندار الفاظ میں خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ پولیس کے بہادر جوانوںنے اپنی جانوں کا نذرانہ دے کر دہشتگردوں کے عزائم خاک میں ملا دئیے۔ آصف علی زرداری نے کہا کہ دہشتگردوں کو شکست دینے میں پولیس کا بھی قابل تعریف اور ناقابل فراموش کردار رہا ہے۔ آصف علی زرداری نے کہا کہ امن کی بحالی پر پولیس کے ان دلیر اور بہادر جانثاروں کو خراج عقیدت پیش کیا جائے اور ان کے خاندانوں کو تنہا نہ چھوڑا جائے۔