خبر آرکائیو

پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر اور سابق صدر پاکستان آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ پنجاب پاکستان پیپلزپارٹی کا تھا ، ہے اور رہے گا۔

پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر اور سابق صدر پاکستان آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ پنجاب پاکستان پیپلزپارٹی کا تھا ، ہے اور رہے گا۔ آئندہ انتخابات کے بعد وزیراعلیٰ بھی پاکستان پیپلزپارٹی کا جیالا ہوگا۔
یہ بات انہوں نے لاہور میں حلقہ این اے 120 کے عہدیداران اور کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ اس موقع پر پیپلزپارٹی کے امیدوار فیصل میر پیپلزپارٹی پنجاب کے صدر قمر زمان کائرہ، پیپلزپارٹی لاہور کے صدر عزیز الرحمن چن اور ثمینہ خالد گھرکی بھی موجود تھے۔ آصف علی زرداری نے کہا کہ
پاکستان پیپلزپارٹی کے کارکن اس بار نہ دھاندلی ہونے دیں گے اور نہ ہی انتخابات کے نتائج چوری کرنے دیں گے۔ پاکستان پیپلزپارٹی پنجاب کی تنظیم مکمل ہو چکی ہے، پارٹی کارکن متحرک ہیں اور کارکنوں کی جدوجہد اور محنت سے کامیابی حاصل کریں گے۔ انہوں نے کارکنوں کو ہدایت کی کہ وہ گلی محلوں
میں جائیں اور ووٹروں کو بتائیں کہ پاکستان پیپلزپارٹی میدان میں ہے۔ درایں اثناءمسلم لیگ(ن) کے رہنما تنویر زمان رندھاوا نے آصف علی زرداری سے ملاقات کرکے پاکستان پیپلزپارٹی میں شمولیت کا اعلان کیا۔ تنویر زمان رندھاوا نے کہا کہ اس ملک میں صرف پاکستان پیپلزپارٹی ہی واحد پارٹی ہے جو عوام کی سیاست کرتی ہے اور عوام کی خدمت کا جذبہ رکھتی ہے۔ اس موقع پر
آصف علی زرداری نے تنویر نے تنویر زمان کی پیپلزپارٹی میں شمولیت کا خیرمقدم کیا۔ پیپلزپارٹی پنجاب کے صدر قمر زمان کائرہ، پولیٹیکل سیکریٹری رخسانہ بنگش اور فیصل میر بھی موجود تھے۔

، سابق صدرِ پاکستان اور پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری نے قوم کو 70ویں یوم آزادی کے موقع پر مبارکباد دیتے ہوئے

سابق صدرِ پاکستان اور پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری نے قوم کو 70ویں یوم آزادی کے موقع پر مبارکباد دیتے ہوئے عوا م سے کہا ہے کہ وہ خود جمہوریت اور عوام کی فلاح کے لئے وقف کردیں کیونکہ انہی دو نظریوں کے لئے پاکستان وجود میں آیاتھا۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں آزادی کی خوشیاں مناتے ہوئے یہ بات نہیں بھولنی چاہیے کہ ملک کی بنیادی قدروں کو خطرات درپیش ہیں ۔ آج ہمیں اس عزم کا اعادہ کرنا چاہیے کہ چند عناصر کی جانب سے پاکستان کو ملائیت کی ریاست بنانے کی کوششوں کو مسترد کر دیں گے اور پاکستان کو کبھی بھی ملائیت کی ریاست نہیں بننے دیں گے۔ ہمارے ذہنوں میں ہمیشہ عوام کی فلاح و بہبود کا نظریہ ہونا چاہیے اور عوام کی فلاح و بہبود سے ملک کی سلامتی مستحکم ہوگی۔ آج ہم ان تمام لوگوں کو خرج عقیدت بھی پیش کرتے ہیں جنہوں نے پاکستان بنانے کی جدوجہد کے لئے اپنی جانوں کا نظرانہ پیش کیا اور مشکلات برداشت کیں۔ آج ہمارے ملک کو خطرات لاحق ہیں اور کالعدم عسکری تنظیمیں نئے ناموں سے دوبارہ زندہ ہو رہی ہیں اور قانون اور نیشنل ایکشن پلان کا کوئی خیال نہیں کیا جا رہا۔ ہم آج ان لوگوں کو بھی خراج عقیدت پیش کرتے ہیں جنہوں نے عسکریت پسندی کے خلاف لڑتے ہوئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا اور جمہوریت اور قانون کی حکمرانی کے لئے اپنی جانیں ملک پر نچھاور کیں۔ یہ تمام لوگ ہمارے قومی ہیرو اور ہیروئنیں ہیں۔ دشمن نے یوم آزادی کے موقع پر کوئٹہ میں ایک مرتبہ پھر حملہ کیا اور ہمارے بہادر فوجی اور شہری شہید ہوئے۔ ہم ان شہیدوں کو سلام پیش کرتے ہیں اور عہد کرتے ہیں کہ بزدل دشمن کے خاتمے تک ہم دشمنوں کے خلاف جنگ جاری رکھیں گے۔ آج اس بات کا بھی عہد کرتے ہیں کہ پاکستان کو حقیقی معنوں میں ایک جدید، جمہوری، ترقی پسند اور لبرل ملک بنائیں گے جہاں ہر شہری کو آزادی ہوگی اور ترقی اور خوشحالی کے مساوی مواقع میسر ہوں گے۔

پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو ز رداری نے زرداری ہاﺅس اسلام آباد میںمینارٹی ڈے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا

پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو ز رداری نے زرداری ہاﺅس اسلام آباد میںمینارٹی ڈے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی نے ہمیشہ انسانی برابری پر مبنی معاشرے کے لئے جدوجہد کی ہے جہا ں ہر پاکستانی برابری کی حیثیت رکھتے ہیں۔ شہید ذوالفقار علی بھٹو اور شہید محترمہ بینظیر بھٹو نے اپنے پوری زندگی میں ہمیشہ برابری کے حقوق کے لئے جدوجہ جہد کی۔ ہماری پارٹی میں بہادر کارکن شہید سلیمان شہید اور شہید شہباز بھٹی نے قربانی دی تاکہ برابری پر مبنی سوسائٹی قائم ہوسکے، جہاں مسلم پاکستانی ہوں یا غیرمسلم پاکستانی حقوق برابر ہونے چاہئیں۔ ہر شہری اور سوسائٹی کو برابر مواقع ملنے چاہئیں۔ ہر سوسائ ©ٹی یا سیاست ہو یا معیشت ہو یا معاشرہ ہواس میں ہم برابری چاہتے ہیں۔چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی اقتدار میں آکرایسی قانون سازی کرے گی جس میں سب کے لئے مساوی حقوق ہوں اور ایسے قوانین جو متنازعہ ہیں یا غلط ہیں ان کو بہتر بنائیں گے۔

پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر اور سابق صدر پاکستان آصف علی زرداری نے اقلیتوں کے دن 11اگست کے موقع پر اپنے پیغام میں کہا ہے

پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر اور سابق صدر پاکستان آصف علی زرداری نے اقلیتوں کے دن 11اگست کے موقع پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ اقلیتوں کے دن منانے کا مقصد یہ ہے کہ ہم قائداعظم کی 11اگست 1947ءکی تقریر جو انہوں نے آئین ساز اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے کی تھی جس میں انہوں نے ریاست کی پالیسیوں بشمول پاکستان میں غیرمسلم شہریوںکے متعلق ریاستی پالیسی بیان کی تھی۔ ہم اسے اپنے اندر جذب کریں اوراس کا حقیقی مطلب سمجھیں۔ اپنی اس تاریخی تقریر میں قائداعظم میں کہا تھا کہ آپ کسی بھی مذہب، رنگ و نسل سے تعلق رکھتے ہوں ریاست کا اس میں کوئی دخل نہیں اور ہم پاکستان کو مستحکم اور خوشحال دیکھنا چاہتے ہیں اور ہمیںقائداعظم کے ان بنیادی اصولوں کی طرف لوٹنا ہوگا۔ سابق صدر نے کہا کہ جب سے ریاست میں ڈکٹیٹرشپ کے زمانے میں جہاد کی نجکاری کی جانب سے آنکھیں بند کر لی گئی ہیںاس وقت سے قوم قائداعظم کے وژن سے دور ہوتی جا رہی ہے۔ ہمیں ہر صورت میں جہاد کی نجکاری کے پروجیکٹ کو ختم کرنا ہوگا ور اپنے درمیان سے عسکریت پسندوں، انتہاپسندوں اور مذہبی جنونیت کو نکالنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ انہیں اس بات پر سخت تشویش ہے کہ نیشنل ایکشن پلان کے اہم عناصر پر عملدرآمد نہیں ہورہا اور فرقہ واریت پھیلانے والے جنونیوں اور کالعدم عسکری تنظیموں کے خلاف کوئی ایکشن نہیں لیا جارہا اور یہ تنظیمیں نئے ناموں سے دوبارہ ابھر کر سامنے آرہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس موقع پر وہ مطالبہ کرتے ہیں کہ فرقہ واریت، عسکریت پسندی اور انتہاپسندی کے خلاف جنگ کے لئے قاضی فیض عیسیٰ کی رپورٹ پر عملدرآمد کیا جائے۔ ہمیں ہر صورت میں ملک میں اندرونی طور پر امن و امان بحال کرنا ہوگا جس سے عام طور پر تمام شہریوں اور خاص طور پر غیرمسلم شہریوں کا ریاست پر اعتماد بحال کرنا چاہیے۔ آج کے روز ہم ان لوگوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں جن لوگوں نے بین المذاہب ہم آہنگی اور غیرمسلم شہریوں کے حقوق کے لئے قربانیاں پیش کی ہیں۔ یہ لوگ قوم کے ہیرواور ہیروئن ہیں۔

پاکستان پیپلزپارٹی جنوبی پنجاب کے سیکریٹری اطلاعات شوکت محمود بسرا نے کہا ہے

پاکستان پیپلزپارٹی جنوبی پنجاب کے سیکریٹری اطلاعات شوکت محمود بسرا نے کہا ہے کہ کرپٹ مافیا کی انجمن پی ٹی آئی کی سیاست زوال پذیر ہے۔ فواد چوہدری جیسے مسخرے اور سدا بہار لوٹے عمران خان کی پہچان بن چکے ہیں۔ جواد چوہدری کی طرف سے چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کے خلاف بیان بازی پر ردعمل کرتے ہوئے کہا کہ گرگٹ کی طرح رنگ بدلنے اور وفاداریاں تبدیل کرنے والے فواد چوہدری جیسے لوگ اپنا ضمیر کشکول میں لئے پھرتے ہیں۔پاکستان پیپلزپارٹی میڈیا آفس میں اخبار نویسوں سے بات چیک کرتے ہوئے شوکت بسرا نے کہا کہ اسلام آباد میں عمران خان کا نیا پاکستان فواد چوہدری جیسا ہوگا۔ شوکت محمود بسرا نے کہا کہ عمران خان اور ان کی پارٹی سیاست کے آداب سیکھے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان کی سیاسی ولادت جنرل حمید گل کے ہاتھوں ہوئی۔ یہ بات ریکارڈ پر ہے کہ جنرل حمید گل اور عمران خان نے مل کر درویش صفت انسان عبدالستار ایدھی کو بلیک میل کرنے کی کوشش کی تھی تاکہ وہ محترمہ بینظیر بھٹو شہید کے خلاف کام کرے مگر درویش صفت انسانیت کے خدمت گار عبدالستار ایدھی نے بلیک میل ہونے سے انکار کر دیا تھا۔ شوک محمود بسرا نے کہا کہ عمران خان کا ا بنی گالاکالے دھن کا شاخسانہ ہے۔ یہ کہنا کہ لندن میں فلیٹ بیچا اور جمائمہ نے پیسے بھیجے محض کہانیاں ہیں۔ شوکت محمودبسرا نے کہا کہ کے پی میں پی ٹی آئی کے اراکین صوبائی اسمبلی وزیراعلی پرویز خٹک کی کرپشن کا پردہ چاک کر رہے ہیں جو اس بات کا ثبوت ہے کہ کرپشن کی کمائی بنی گالہ منتقل ہو رہی ہے۔ شوکت بسرا نے کہا کہ سیاسی خانہ بدوشوں پر مشتمل پی ٹی آئی تیزی سے تباہی کی طرف جا رہی ہے۔

 

پاکستان پیپلزپارٹی کے رہنما سعید غنی نے جنرل مشرف کے حالیہ انٹرویو پر سخت ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا

پاکستان پیپلزپارٹی کے رہنما سعید غنی نے جنرل مشرف کے حالیہ انٹرویو پر سخت ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف تاریخ کو مسخ کرنے کی کوشش نہ کریں۔ پاکستان توڑنے کی شروعات بیوروکریٹ غلام محمد نے کی تھی جنہوں نے مغربی پاکستان سے تعلق رکھنے والے وزرائے اعظم سے توہین آمیز سلوک کیا۔ اس کے بعد جنرل ایوب خان نے سیاستدانوں کو ایبڈو کے ذریعے سیاست سے بے دخل کیا۔ رہی سہی کسر جنرل یحٰی خان نے پوری کی۔ اگر جنرل مشرف کو نہیں معلوم تو جسٹس حمود رحمن کمیشن کی رپورٹ کو پڑھنے کی زحمت گوارا کرے۔ پی پی پی رہنما نے کہا کہ قائدعوام ذوالفقار علی بھٹو شہید پر ملک توڑنے کا الزام لگانے والے شرم کریں کیونکہ قائدعوام ذوالفقار علی بھٹو نے پاکستان کی ہزاروں مربع میل زمین واپس لی جس پر بھارت نے بغیر کسی مزاحمت کے قبضہ کیا تھا۔ 90ہزار فوجی جوانوں کو وطن واپس لے کر آئے جو بھارت کی جیلوں میں قید تھے۔ انہوں نے کہا کہ قائدعوام ذوالفقار علی بھٹو نے راکھ کا ڈھیر بنے ہوئے ملک کی دوبارہ تعمیر کی اور قوم کو دنیا کی باوقار قوموں میں شامل کیا۔ سعید غنی نے کہا کہ قائدعوام بھٹو نے ملک کو 1973ءکا آئین دیا جو آج بھی وفاق کی ضمانت ہے۔ انہوں نے کہا کہ ڈکٹیٹر آئین کو پامال کرکے اقتدار پر قبضہ اور قوم کو یرغمال بناتے ہیں اور تباہی کر کے چلے جاتے ہیں۔ سعید غنی نے کہا کہ جنرل مشرف نے قوم کو کارگل پر رسوائی دی اور دہشتگردی کے خلاف جنگ میں صرف گونگلوں سے مٹی جھاڑنے کی واردات کی۔ انہوں نے کہا کہ قائدعوام ذوالفقار علی بھٹو نے پاکستان کے عوام کو ایک قوم بنایا جبکہ جنرل ضیاءنے قوم کو برادریوں میں تقسیم کیا، جہاد کے نام پر شدت پسندی اور دہشتگردی کی نرسریاں پیدا کیں، کلاشنکوف اور منشیات کے کلچر کو فروغ دیا۔ سعید غنی نے جنرل مشرف کو مشورہ دیا کہ میڈیا سے بات کرتے ہوئے ہوش میں رہا کریں۔

 

 

پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے سیکریٹری جنرل سینیٹر فرحت اللہ بابر نے این اے 120 کے ضمنی انتخابات کے لئے پارٹی ٹکٹ کے خواہش مندوں سے درخواستیں طلب کر لی ہیں

پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے سیکریٹری جنرل سینیٹر فرحت اللہ بابر نے این اے 120 کے ضمنی انتخابات کے لئے پارٹی ٹکٹ کے خواہش مندوں سے درخواستیں طلب کر لی ہیں۔ سینیٹر فرحت اللہ بابر نے ہدایت کی ہے کہ پارٹی ٹکٹ کے لئے درخواست صدر پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرنز کے نام مبلغ 30000روپے کا پے آرڈ بنام پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز 9اگست تک زرداری ہاﺅس، مکان نمبر9، اسٹریٹ نمبر19، سیکٹر F-8/2، اسلام آباد کے پتہ پر ارسال کی جائیں۔

 

 

پاکستان پیپلزپارٹی سندھ کے سیکریٹری اطلاعات سینیٹر عاجز دھامراہ نے تحریک انصاف کے سربراہ عمران کے خطاب میں صدر آصف علی زرداری کے حوالے سے الزامات لگانے پر سخت ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے

کراچی(31جولائی) پاکستان پیپلزپارٹی سندھ کے سیکریٹری اطلاعات سینیٹر عاجز دھامراہ نے تحریک انصاف کے سربراہ عمران کے خطاب میں صدر آصف علی زرداری کے حوالے سے الزامات لگانے پر سخت ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ عمران خان ہمیشہ اپنی اناء اور ضد کے گھوڑے پر سوار ہو کر پیپلزپارٹی پر تنقید کرتے ہیں،جلسہ سے خطاب کے دوران بھی انہوں نے پیپلزپارٹی پر تنقید کی ہے لیکن وہ بھول گئے ہیں کہ اگر ملکی تاریخ میں کسی پارٹی کو بدترین سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا گیا ہے یا کسی ایک پارٹی کا کٹھن سے کٹھن احتساب کیا گیا ہے وہ پاکستان پیپلزپارٹی ہے، سینیٹر عاجز دھامراہ نے کہا کہ عمران یہ کیوں بھول جاتے ہیں کہ آصف علی زرداری کا وہ نام لے رہے ہیں ان کو بغیر کسی ثبوتوں کے جیلوں میں ڈالا گیا، تمام کیسز اور ریفرنسز کا کوئی ثبوت نہ مل سکا، ہم تو کہتے ہیں کہ آصف علی زرداری کو بلا کسی ثبوت کے 11 سال جیل میں رکھنے کا حساب دیا جائے،سینیٹر عاجز دھامراہ نے کہا کہ احتساب کے حوالے سے پیپلزپارٹی اور اس کی قیادت پہلی باری بھگت چکی ہے لیکن اس کا کوئی ثبوت نہیں مل سکا ہے، انہوں نے کہا کہ ملک میں سب کے لیے ایک جیسا احتساب کرنے کے لیے ایک بل سینیٹ سے منظور ہو چکا ہے عمران خان اس بل کو قومی اسیمبلی سے منظور کروانے میں مدد کریں، اگر عمران خان خود کو صاف شفاف رہنما سمجھتے ہیں تو سب سے پہلے اپنے احتساب کا مطالبہ کیوں نہیں کرتے،وہ الیکشن کمیشن میں بیرونی فنڈنگ میں غبن پر کیوں جواب نہیں دیتے ہیں؟ وہ سپریم کورٹ میں اپنا منی ٹریل کیوں آگے پیچھے کر رہے ہیں،وہ سب سے پہلے تو اپنے احتساب کی بات کریں، آج عمران خان کو چاہیے کہ وہ اداروں سے شہید ذوالفقار علی بھٹو کا کیس دوبارہ کھولنے کا مطالبہ کریں، سینیٹر عاجز دھامراہ نے کہا کہ عمران خان ہمیں دھمکیاں دے رہیں لیکن نہ وہ اس ملک کے وزیراعظم ہیں نہ ہی سپریم کورٹ کے چیف جسٹس ہیں نہ ہی کسی ادارے کے سربراہ،جو وہ خود اپنی مرضی سے کسی کا احتساب کریں گے، اس طرح تو آمروں نے اپنی مرضی کا احتساب کیا، نواز شریف نے بھی اپنی مرضی کا احتساب کیا، ان کے بوس مشرف نے بھی مرضی کا احتساب کیا اب عمران خان بھی یہ شوق پورا کر لیں۔

سوشل میڈیا پر سابق صدر آصف علی زرداری کے متعلق ایک مبینہ اقامہ کی فوٹو کاپی دراصل جعلی، منگھڑت اور فوٹو شاپ کے ذریعے بنائی گئی ہے

سوشل میڈیا پر سابق صدر آصف علی زرداری کے متعلق ایک مبینہ اقامہ کی فوٹو کاپی دراصل جعلی، منگھڑت اور فوٹو شاپ کے ذریعے بنائی گئی ہے تاکہ سابق صدر اور پاکستان پیپلزپارٹی کو بدنام کیا جا سکے اور یہ ان لوگون کا کام ہے جو پاکستان کے تمام سیاسی طبقے کی ساکھ خراب کرنا چاہتے ہیں۔ یہ عمل انتہائی گھناﺅنا اورقابل مذمت ہے۔ پاکستان پیپلز پارٹی کے ترجمان سینیٹر فرحت اللہ بابر نے آج اپنے ایک بیان میں کہا کہ آصف علی زرداری ابوظہبی کے وزارت صدارتی امور کی جانب سے جاری کئے گئے ویزے پر یو اے ای میں جا کر قیام کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سابق صدر کے پاس کسی بھی کمپنی کی ملازمت یا پارٹنرشپ کا کوئی اقامہ نہیں اور سوشل میڈیا پر یہ غلط اور جھوٹی فوٹو کاپی دکھائی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایسا لگتا ہے کہ سپریم کورٹ کی جانب سے وزیراعظم نواز شریف کو نااہل قرار دینے کے بعد کچھ لوگوں نے اپنے مفادات حاصل کرنے کے لئے یہ مہم شروع کی ہے تاکہ عوامی نمائندوں اور سیاستدانوں کو بدنام کیا جا سکے اور ان کی ساکھ خراب کی جا سکے۔ سینیٹر فرحت اللہ بابر نے سابق صدر کے خلاف اس قبیح مہم کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اس مہم کے پیچھے جو لوگ ہیں وہ ملک کے مفاد میں کام نہیں کررہے۔ جو لوگ آصف علی زرداری اور پاکستان پیپلزپارٹی اور منتخب نمائندوں کو بدنام کرنا چاہتے انہیں یہ سوچنا چاہیے کہ کہیں خود ان کی الماریوں میں ان کے رازوں کے ڈھانچے تو نہیں چھپے ہوئے اور اگر وہ ایسا کرلیں تو انہیں یہ احساس ہو جائے گا کہ انہیں بھی بہت سارے سوالات کے جوابات دینا پڑ سکتے ہیں لیکن ابھی تک وہ احتساب سے بچتے رہے ہیں۔

پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمینٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری کی سالگرہ کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان پیپلزپارٹی کی مرکزی رہنما اور رکن قومی اسمبلی محترمہ فریال تالپور نے کہا ہے

 پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمینٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری کی سالگرہ کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان پیپلزپارٹی کی مرکزی رہنما اور رکن قومی اسمبلی محترمہ فریال تالپور نے کہا ہے کہ آصف علی زرداری نے پانچ سالہ عہد صدارت کے دوران پارٹی کے بانی چیئرمین قائد عوام ذوالفقار علی بھٹو شہید اور محترمہ بینظیر بھٹو شہید کے مشن کی تکمیل کے لئے ہر ممکن اقدامات اٹھائے۔ انہوں نے کہا کہ 1973ءکے آئین کی اصل صورت میں بحال اور پارلیمنٹ کو خودمختار کرنا محترمہ بینظیر بھٹو شہید کا مشن اور سوات میں قومی پرچم سربلند کرناتھا۔ صدر آصف علی زرداری نے 1973ءکا آئین اصل صورت میں بحال کرکے اور پارلیمنٹ کو خود مختار کرکے محترمہ بینظیر بھٹو شہید کے مشن کی تکمیل اور سوات میں قومی پرچم لہرا کر اپنے وعدے کو پورا کیا۔ محترمہ فریال تالپور نے کہا کہ گلگت بلتستان اور کے پی کے عوام کو اپنی شناخت صدر آصف علی زرداری نے دی۔ انہوں نے کہا کہ اقتصادی راہداری صد آصف علی زرداری کا وژن ہے ۔ وہ چاہتے ہیں کہ اقتصادی راہداری کے ثمرات چاروں صوبوں کے عوام کے ساتھ ساتھ گلگت بلتستان کے عوام کو بھی ملیں۔ انہوں نے کہا کہ صدر آصف علی زرداری نے صوبوں کو خودمختاری دے کر قائدعوام ذوالفقار علی بھٹو شہید کے وعدے کی تکمیل اور این ایف سی ایوارڈکے زریعے تمام صوبوں سے معاشی انصاف دیا۔ محترمہ فریال تالپور نے کہا کہ صدر آصف علی زراری کے زیر قیادت جمہوری حکومت نے پانچ سال کے درمیان سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں ریکارڈ اضافہ کیا اور بےنظیر انکم پروگرام کے ذ ©ریعے ملک بھر کی غریب خواتین کی مالی اعانت کی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان پیپلز پارٹی کے کارکنوں کو اپنے قائد آصف علی زرداری پر فخر ہے جنہوں نے طویل قید کاٹی ، اصولوں پر ثابت قدم رہے اور بہادری کی مثال قائم کی۔ تقریب میں پاکستان پیپلزپارٹی پنجاب کے جنرل سیکریٹری، ندیم افضل چن، رانا فاروق سعید، نرگس فیض ملک سمیت دیگر پارٹی کارکنوں نے شرکت کی۔ تقریب میں سالگرہ کا کیک بھی کاٹا گیا۔