خبر آرکائیو

چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کے ترجمان سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھر نے کہا ہے کہ اپوزیشن نہیں حکمران ذاتی ایجنڈے کی تکمیل چاہتے ہیں،

چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کے ترجمان سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھر نے کہا ہے کہ اپوزیشن نہیں حکمران ذاتی ایجنڈے کی تکمیل چاہتے ہیں، قوم دیکھ رہی ہے کہ عہدے کی لالچ دینے والے ذاتی ایجنڈے پر عمل پیرا ہیں یا پیشکش کو ٹھکرانے والے؟ پیپلز پارٹی کا ایجنڈا پہلے بھی جمہوریت اور اداروں کا استحکام تھا اب بھی وہ ہی ہے۔ سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھر نے فواد چودھری سے سوال کیا کہ آئی جی اسلام کو اپوزیشن کے کس سیاسی ایجنڈہ کے تحت ہٹایا گیا؟ قوم گواہ ہے ڈی پی او پاک پتن کس کے ذاتی ایجنڈے پر ہٹایا گیا۔ سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھر نے کہا کہ احتساب کے نام پر سیاسی انتقام سے لیکرتقرر اور برطرفیوں تک سب ساتھ ایجنڈا کا حصہ ہے۔بلاول بھٹو کے ترجمان نے کہا کہ قوم سوال کر رہی ہے کہ میڈیا کی آزادی کس کا ذاتی ایجنڈا پورا کرنے کے لئے صلب کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکمران الزامات کی دھول اڑاکر تمام جمہوری آزادیاں صلب کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ہم شہیدوں کے وارث ہیں پارلیمانی جمہوری نظام اور بنیادی حقوق پر کوئی سمجھوتہ نہیں کرینگے۔

 

پاکستان پیپلزپارٹی کا 51واں یوم تاسیس 30نومبر کو جوش و خروش سے منایا جائے گا۔ پروگرام کے مطابق یوم تاسیس کی بڑی تقریب سکھر میں ہوگی

پاکستان پیپلزپارٹی کا 51واں یوم تاسیس 30نومبر کو جوش و خروش سے منایا جائے گا۔ پروگرام کے مطابق یوم تاسیس کی بڑی تقریب سکھر میں ہوگی۔ جس سے چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری پارٹی کے مرکزی اور صوبائی رہنما سکھر میں ایک بہت بڑے جلسہ عام سے خطاب کریں گے۔

 

چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری گلگت بلتستان کے پانچ روزہ دورے پر جائیں گے

چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری گلگت بلتستان کے پانچ روزہ دورے پر جائیں گے۔ یہ دورہ 17نومبر سے شروع ہوگا۔ اس دورے کے دوران بلاول بھٹو زرداری 18نومبر کو گلگت میں ایک عوامی اجتماع سے خطاب کریں گے اور اپنے دورے کے دوران پارٹی کی مختلف تنظیموں کے عہدیداروں سے ملاقات کریں گے۔

 

 

سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری نے دیوالی کے موقع پر ہندو برادری کو مبارکباد کا پیغام دیتے ہوئے کہا ہے

سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری نے دیوالی کے موقع پر ہندو برادری کو مبارکباد کا پیغام دیتے ہوئے کہا ہے کہ بین المذاہب آہنگی کو فروغ دیا جائے۔ اپنے دیوالی کے پیغام میں سابق صدر نے کہا کہ وہ تمام ہندوﺅں کواپنی اور پاکستان پیپلزپارٹی کی جانب سے مبارکباد پیش کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی کا یہ عزم ہے کہ وہ مذہبی جنونیت اور منافرت کے خلاف لڑتی رہے گی اور بین المذاہب ہم آہنگی کو فروغ دے گی۔ پاکستان پیپلزپارٹی اقوام متحدہ کی ان قراردادوں کی حمایت اور عزت کرتی ہے جن میں بین المذاہب ہم آہنگی کے فروغ اور اقلیتوں کے حقوق کے تحفظ کی بات کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی اقلیتوں کے حقوق کی اسی طرح حفاظت کرتی رہے گی جس طرح قائداعظم محمد علی جناح اور قائد عوام شہید ذوالفقار علی بھٹو اور قائد جمہوریت محترمہ بینظیر بھٹو شہید نے ہمیں اقلیتوں کا احترام کرنے کی تعلیم دی ہے۔ آصف علی زرداری نے کہا کہ ہندو اور تمام دیگر اقلیتیں پاکستان میں برابر کی شہری ہیں اور ان کے حقوق بھی برابر کے ہیں۔

 

 

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کو وزیراعلیٰ سندھ کی جانب سے لاڑکانہ میں جاری ترقیاتی منصوبوں کے متعلق تفصیلی بریفنگ دی گئی۔

لاڑکانہ (27 اکتوبر 2018) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کو وزیراعلیٰ سندھ کی جانب سے لاڑکانہ میں جاری ترقیاتی منصوبوں کے متعلق تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ اس موقعے پر پی پی پی سندھ کے صدر نثار احمد کھڑو، صوبائی وزراء ناصر حسین شاہ، سعید غنی، مکیش چاولہ اور مرتضیٰ وہاب، معاون خصوصی اشفاق احمد میمن، ارکان اسمبلی آفتاب شعبان میرانی، سردار چانڈیو، خورشید جونیجو، برہان چاڈیو، ندا کھڑو، حزب اللہ بُگہیو، نصیباں چنا، گنہور خان ایسران، پروین قائمخانی، اعجاز جکھرانی، عبدالفتاح بھٹو، خیر محمد شیخ، خان سانگری، اسلم شیخ اور دیگر رہنما بھی موجود تھے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے پارٹی چیئرمین کو بتایا کہ حکومت سندھ ضلع لاڑکانہ میں جامع منصوبابندی کے تحت آبپاشی، مواصلات اور پولیس کے شعبوں کو جدید خطوط پر استوار کرنے کے جامع منصوبابندی کے تحت کام کر رہی ہے اور ضلع میں جاری تمام ترقیاتی منصوبوں کو مقررہ وقت پر مکمل کرلیا جائیگا۔ وزیراعلیٰ نے بتایا کہ وارہ، شہدادکوٹ کے علاقوں میں پانی کی شدید قلت ہے اور محکمہ آبپاشی کی جانب مذکورہ علاقوں تک پانی کی فراہمی کو یقینی بنایا جا رہا ہے۔ اس موقعے پر چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے امن امان کو برقرار رکھنے پر پولیس کو شاباس دی اور کہا کہ پولیس کے جوانوں کی قربانیوں ناقابل فراموش ہیں۔ انہوں نے کہا کہ لاڑکانہ سمیت سندھ بھر میں جاری ترقیاتی منصوبوں کو مقررہ وقت پر مکمل کیا جائے اور عوام کو مزید سہولیات کے لیئے نئے منصوبے بنائے جائیں۔ بلاول بھٹو زرداری نے زور دیا کہ لاڑکانہ کے ماسٹر پلان پر عملدرآمد کو جلد از جلد شروع کیا جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ زرعی پانی کی منصفانہ تقسیم کو یقینی بنایا جائے تاکہ کسی بھی کسان اور کاشتکار سے ناانصافی نہ ہو۔

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کے ترجمان سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھر نے عمران خان کے خطاب پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کے ترجمان سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھر نے عمران خان کے خطاب پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ قرضہ اور بھیک نہ مانگنے کے دعوے کرنے والا شخص آج قرضہ بھی لے رہا ہے اور بھیک بھی مانگ رہا ہے۔ سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھر نے کہا کہ کھربوں روپے قرضہ لینے والا وزیراعظم قوم کو بتائے کہ کن شرائط پر قرضہ لے رہے ہیں۔ چیئرمین پیپلز پارٹی کے ترجمان نے کہا کہیں یہ تو نہیں کہ قوم کے بہت بڑے اثاثے ریکوڈک کو کوڑیوں کے مول تو نہیں بیچ رہے ہیں اس حوالے سے پارلیمنٹ میں وضاحت کریں۔ سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھر نے کہا کہ عمران خان سعودی عرب اور یمن کے درمیان ثالثی کا وعدہ سے پہلے یہ بتائیں کہ انہوں نے اس حوالے سے پارلیمنٹ کی منظور شدہ قرارداد پڑھی ہے اس حوالے سے اور ثالثی کے حوالے سے پارلیمان میں وضاحت کرے۔ کی حکومت میں ڈالر کی قیمت میں اضافے سے قوم پر 28 سو ارب کا مزید قرضے کا بوجھ پڑا ہے۔ سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھر نے کہا کہ عمران خان سے این آر او کون مانگتا ہے عمران خان اپنا این آر او اپنے پاس سنبھال کر رکھیں۔ سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھر نے کہا کہ عمران خان اب کنٹینر سے اتریں اور عوام کو ریلیف دیں۔انہوں نے کہا عوام نیازی صاحب کی باتوں پر کیسے یقین کر سکتے ہیں کہ آج ہی تو انہوں نے بجلی کی قیمتوں میں اضافہ کیا ہے۔سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھر نے کہا کہ عمران خان پہلے جنوبی پنجاب کو صوبہ بنائیںپھر پچاس لاکھ گھر بنانے کے دعوے کریں۔

 

 

پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرین کے صدر آصف علی زرداری نے سانحہ کار ساز کے شہیدوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ہے

پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرین کے صدر آصف علی زرداری نے سانحہ کار ساز کے شہیدوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ہے ان شہیدوں کی عظیم اور بے مثال قربانی کی وجہ سے جمہوریت کا تابناک سورج طلوع ہوا۔ایک پیغام میں آصف علی زرداری نے کہا کہ 18 اکتوبر 2007 کو وطن دشمنوں نے کارساز کے مقام پر کاروانِ جمہوریت کی تاریخی اور بے مثال ریلے پر حملہ کیا ، مگر پختہ عزم ، وفادار اور بہادر جیالوں نے اپنی جان کو ڈھال بناکر اپنی زندگی قربان کرکے اپنی عظیم بہن محترمہ بینظیر بھٹو شہید کا تحفظ کیا۔آصف زرداری نے کہا جمہوریت کے ان روشن ستاروں کی قربانی کی وجہ سے آمریت کو شکست اور جمہوریت کی فتح ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ آج ان شہیدوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کا دن ہے جو شدت پسندوں اور دہشتگردوں کے ناپاک عزائم کو کار ساز کے مقام پر شکست دیکر قوم کے سامنے اس حقیقت کو آشکار کیا شدت پسند ہمارے اور ہمارے وطن کے دشمن ہیں۔ آصف زرداری نے کہا کہ 18 اکتوبر 2007 کو کراچی شہر میں 30 لاکھ سے زیادہ عوام نے پاکستانی قوم پرست محترمہ بےنظیر بھٹو شہید کے نظرئیے کی تائید کی کہ قائد اعظم اور قائد عوام کے پاکستان کو پرامن، جمہوری، اور باوقار ملک بنائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے ان شہیدوں کی جدوجہد کو با ثمر کرتے ہوئے 1973 کے آئین کو بحال کیا، پارلیمنٹ کو بااختیار بنانا، صوبوں کو خود مختاری دی، پختونخوا اور گلگت بلتستان کے عوام کو ان کی پہچان دی۔ سابق صدر نے کہاکہ آج اس جمہوریت کو خطرات لاحق ہو گئے ہیں جو بہت بڑی قربانیوں کے بعد بحال ہوئی تھی۔ آصف زرداری نے اس عزم کا اظہار کیا کہ وہ عوام کی منتخب پارلیمنٹ کا دفاع کرتے رہیں گے۔

 

 

 

کراچی میں امن و امان کی صورتحال میں بہتری آئی ہے ; سید ناصر حسین شاہ

سندھ کے صوبائی وزیر مواصلات سید ناصر حسین شاہ نے کہا ہے کہ کراچی میں امن و امان کی صورتحال میں بہتری آئی ہے،سٹریٹ کرائم کی روک تھام کیلئے سیف سٹی منصوبے کا آغاز کرنے جا رہے ہیں، پیپلز پارٹی ہارس ٹریڈنگ پر یقین نہیں رکھتی، تھر کا نقشہ بدل چکا ہے ، تھر میں مفت گندم تقسیم کر رہے ہیں،تھر میں بچوں کی اموات کی شرح ملک سے زیادہ نہیں ہے جبکہ ابھی تک تو تبدیلی نظر نہیں آ رہی صرف یوٹرن نظر آ رہا ہے۔نذیر دھوکی کے ہمراہ اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ٹرانسپورٹ کے متعلقہ منصوبے کو جلد مکمل کرینگے،میٹرو منصوبے پر وفاقی حکومت ماہانہ 8لاکھ روپے سبسڈی دے رہی تھی،ہم نے ٹرانسپورٹ کے منصوبے پر 15فیصد ادائیگی کر رہے تھے جبکہ باقی کی رقم سپانسرز کے ذریعے ادا کی جا رہی تھی،پہلے ٹرانسپورٹرز نے ہمارا ساتھ دینے کا وعدہ کیااور پھر وہ پیچھے ہٹ گئے جس کی وجہ سے یہ منصوبہ تاخیر کا شکار ہوا،ہم پانچ،چھ ماہ کے دوران شہر میں 600بسیں جبکہ دیہی علاقوں میں بھی 600بسیں چلا دینگے۔گرین بس سروس منصوبے کے حوالے سے وزیر اعظم عمران خان کیساتھ میٹنگ ہوئی ہے اور انہوں نے بھی اس منصوبے میں مدد دینے کا وعدہ کیا ہے۔ناصر حسین شاہ نے کہا کہ کراچی میں امن و امان کی صورتحال میں بہتری آئی ہے،سٹریٹ کرائم کی روک تھام کیلئے سیف سٹی منصوبے کا آغاز کرنے جا رہے ہیں،سٹریٹ کرائم میں سزا کم ہونے کی وجہ سے مجرم جلد رہا ہو جاتے ہیں ،اس حوالے سے قانون سازی کر رہے ہیں تاکہ سپیڈی ٹرائلز کے ذریعے زیادہ سزائیں دی جا سکیں۔انہوں نے کہا کہ تھر کا نقشہ بدل چکا ہے ،سڑکیں ،ہسپتال اور موبائل ڈسپنسریاں عام ہیں ،اس صحرائی علاقے میں جلد شادیاں ہونے کی وجہ سے بھی بچوں کی اموات ہوتی ہیں تاہم اس حوالے سے پورے ملک سے تھر کی شرح زیادہ نہیں ہے۔ہم نادرا سے ریکارڈ حاصل کرکے تھر میں مفت گندم تقسیم کر رہے ہیں۔ناصر حسین شاہ نے کہا کہ پیپلز پارٹی ہارس ٹریڈنگ پر یقین نہیں رکھتی،پیپلز پارٹی نے این ایف سی ایوارڈ پاس کیا ،صوبے مضبوط ہونگے تو وفاق مضبوط ہوگا۔انہوں نے کہا کہ ابھی تک تو تبدیلی نظر نہیں آ رہی صرف یوٹرن نظر آرہا ہے۔انہوں نے کہا کہ انسانی اعضا کی سمگلنگ کو بڑھا چڑھا کر پیش کیا جا رہا ہے ،اس میں اتنی حقیقت نہیں ہے

پاکستان پیپلزپارٹی کے سابق سیکریٹری اطلاعات سینیٹر تاج حیدر نے ایک بیان میں یہ تجویز دی ہے کہ ڈیم کی تعمیر کے لئے قوم کی جانب سے عطیہ کی گئی رقم کو بلوچستان میں 100 چھوٹے ڈیموں

پاکستان پیپلزپارٹی کے سابق سیکریٹری اطلاعات سینیٹر تاج حیدر نے ایک بیان میں یہ تجویز دی ہے کہ ڈیم کی تعمیر کے لئے قوم کی جانب سے عطیہ کی گئی رقم کو بلوچستان میں 100 چھوٹے ڈیموں کی تعمیر کے تیسرے اور آخری مرحلے کے لئے استعمال کیا جائے۔ سینیٹر تاج حیدر نے کہا ہے کہ دیامیر بھاشا ڈیم کی تعمیر کے لئے پانچ ٹھیکیداروں کی بولیاں موصول ہوگئی ہیں۔ اس ڈیم کی تعمیر کے لئے 1500ارب روپے درکار ہیں جبکہ اس وقت تک ڈیم کی تعمیر کے لئے جو رقم اکٹھی کی گئی ہے وہ صرف ساڑھے تین ارب روپے ہیں جو زیادہ سے زیادہ چھ یا سات ارب تک پہنچ سکتی ہے لیکن یہ رقم دیامیر بھاشا جیسے میگا پروجیکٹ کے لئے کوئی معنی نہیں رکھتی۔ انہوں نے کہا کہ اگر یہ رقم بلوچستان میں قائم کئے گئے 100چھوٹے ڈیموں کے لئے استعمال کی جائے تو اس سے بلوچستان کے دور دراز علاقوں میں رہنے والے عام آدمی کی زندگی پر بہت بہتر اثر پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ اس تجویز سے ایک طرف تو مفلوک الحال عوام کی بہتری ہوگی اور دوسری جانب ملک کے عوام کی جانب سے بلوچستان کے عوام کے لئے اظہار یکجہتی کا اظہار ہوگا۔ اگر کراچی اور لاہور کا ہر بچہ بلوچستان کے دور دراز علاقوں کے عوام کے لئے چھوٹے ڈیموں کی تعمیر میں مدد کرے تو بلوچستان کے عوام کو یہ احساس بھی ہوگا کہ پاکستان کے عوام اور اس کا ہر بچہ بلوچستان کے لوگوں کی بہتری کے لئے سوچتا ہے اور یہ انتہائی مثبت پیغام ہوگا۔

 

 

 

اسلام آباد (12 ستمبر 2018) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے 1983ع میں  تحریکِ بحالی جمہوریت (ایم آر ڈی) کے دوران خیرپور ناتھن شاہ میں آمر ضیاء کے ہاتھوں شہید

اسلام آباد (12 ستمبر 2018) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے 1983ع میں  تحریکِ بحالی جمہوریت (ایم آر ڈی) کے دوران خیرپور ناتھن شاہ میں آمر ضیاء کے ہاتھوں شہید ہونے والے پارٹی کارکنان کی 35 ویں برسی کے موقعے پر انہیں زبردست خراج عقیدت پیش کیا ہے۔  اپنے پیغام میں پی پی پی چیئرمین نے کہا کہ پاکستان میں جمہوریت اور عوامی حقوق کے لیئے پاکستان پیپلز پارٹی کی قیادت و کارکنان کی قربانیاں و جدوجہد ملک ہی نہیں تاریخِ اقوامِ عالم کا قابلِ فخر باب ہے۔ انہوں نے کہا کہ پوری قوم خیرپور ناتھن شاہ کے شہداء کی مقروض ہے اور ان کی عظیم قربانی کو رائیگان ہونے نہیں دیا جائے گا۔ بلاوہل بھٹو زرداری نے کہا کہ شہید محترمہ بینظیر بھٹو کی زیرقیادت لڑی گئی ایم آر ڈی کی تاریخی سیاسی لڑائی کا ہر پہلو آئںدہ نسلوں کے لیئے نصاب کی حیثیت رکھتا ہے۔ انہوں نے تاریخ و سیاسیات کے اساتذہ پر زور دیا کہ وہ اس نظریاتی و فکری جدوجہد سے نئی نسلوں کو آگاہ کرنے میں اپنا کردار ادا کریں۔ واضح رہے کہ 12 ستمبر 1983ع میں ضلع دادو کے شہر خیرپور ناتھن شاہ میں آمر جنرل ضیا کے ہاتھوں پی پی پی کے 12 کارکنان شہید کردیئے گئے تھے۔ شہداء میں عبدالغنی ابڑو، عبدالعزیز لاکھیر، نظام الدین نائچ، عبدالنبی کھوسو، اللہ ورایو لانگاہ، شاہنواز کھوسو، حبیب اللہ لغاری، دیدار علی کھوکھر، ضمیر حسین جاگیرانی، اعجاز حسین کھونھارو اور منظور احمد چانڈیو شامل تھے۔