Archive for February, 2018

(27) فروری 2018) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ پاکستان کو پرامن، خوشحال اور ترقی پسند ملک بنانے کے لیئے لوگوں کے پاس پی پی پی کے علاوہ دوسرا کوئی آپشن نہیں۔

کراچی (27 فروری 2018) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ پاکستان کو پرامن، خوشحال اور ترقی پسند ملک بنانے کے لیئے لوگوں کے پاس پی پی پی کے علاوہ دوسرا کوئی آپشن نہیں۔ انہوں نے پارٹی کے منتخب نمائندوں، رہنماوَں اور کارکنان پر زور دیا کہ وہ ملک بھر میں بھرپور الیکشن مہم چلانے کے لیئے تیار ہوجائیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے بلاول ہائوس میں ارکان سندہ اسمبلی کے اعزاز میں منعقد عشائیہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ پی پی پی شعبہ خواتین کی مرکزی صدر فریال تالپور، آصفہ بھٹو زرداری، پی پی پی سندھ کے صدر نثار احمد کھڑو، وزیراعلیٰ مراد علی شاہ، اسپیکر آغا سراج درانی، سینیٹر شیری رحمان، مولابخش چانڈیو، اورپارٹی کے دیگر سینیئر رہنماوَں سمیت صوبائی وزراء، ارکان اسمبلی اور سینیٹ کے لیئے پارٹی امیدوارن نے شرکت کی۔ پی پی پی چیئرمین نے کہا کہ سندہ میں ہونے والی ترقی کے متعلق دیگر صوبوں کی عوام کو آگاہ کرنے کی ضرورت ہے، کیونکہ گذشتہ پانچ سالوں کو دوران ماسوائے سندہ دوسرا کوئی صوبہ اس طرح صحت کی سہولیات فراہم نہیں کرسکا، نہ تعلیم کے شعبے میں ایسی نمایاں کارکردگی ہے، جسے علمی سطح پر بھی تسلیم کیا گیا ہو، اور نہ نچلی سطح تک روڈ نیٹ ورک بچھایا گیا ہے۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ لوگوں کو اس بیانیئے میں کوئی دلچسپی نہیں کہ “مجھے کیوں نکالا”، کیوںکہ وہ غربت، بیروزگاری اور دہشتگردی کو جھیل رہے ہیں۔ طالبان کو معافی دینے والے جو پی ٹی آئی کے عمران خان کی زیرقیادت جا کر جمع ہوئے ہیں، وہ بھی عوام کے لیئے متبادل نہیں ہیں کیونکہ وہ بھی تعلیم اور اوقاف کے فنڈز دہشتگردی کے اسپانسرز کو دے کر عوام کے آگے بے نقاب ہوچکے ہیں اور خیبرپختونخواہ میں کچھ بھی ڈلیور نہیں کیا۔ انہوں نے کہا کہ پی پی پی ان پاکستانیوں کے لیئے واحد آپشن ہے، جو ملک میں امن، خوشحالی اور ترقی چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آئیے پارٹی کا پیغام ملک کے طول وعرض میں پھیلائیں کہ وہ فقط پی پی پی ہے، جو پاکستان کے خلاف عالمی سازشوں کا مقابلہ اور انہیں ناکام بنا سکتی ہے۔ فقط پی پی پی ہی خارجہ پالیسی دے سکتی ہے، جو ملک کو آئسولیشن سے نکال سکتی ہے اور دنیا میں ملک کا باوقار مقام بحال کرا سکتی ہے۔ بلاول بھٹو زرداری نے مزید کہا کہ ملک کا آئندہ وزیراعظم اور تمام صوبوں کے وزرائے اعلیٰ پیپلز پارٹی کے ہونگے۔ انہوں نے پارٹی کے رہنماوَں پر زور دیا کہ وہ آئندہ انتخابات کے لیئے بھرپور محنت کریں۔

سکر (24 فيبروري 2018) پاڪستان پيپلز پارٽي جي چيئرمين بلاول ڀٽو زرداري چيو آهي ته هڪ سياسي جماعت پنج سال فقط هڪ شهر کي اوليت ڏيندي رهي،

سکر (24 فيبروري 2018) پاڪستان پيپلز پارٽي جي چيئرمين بلاول ڀٽو زرداري چيو آهي ته هڪ سياسي جماعت پنج سال فقط هڪ شهر کي اوليت ڏيندي رهي، پر سنڌ ۾ پي پي پي جي صوبائي حڪومت عوام جي  بهتري ۽ ڀلائي تي ڌيان ڏنو، اسڪول، ڪاليج ٺاهيا، يونيورسٽيون قائم ڪيون ۽ 6 وڏيون اسپتالون تعمير ڪيون. سکر ۾ NICVD سيٽلائيٽ سينٽر جي افتتاحي تقريب کي خطاب ڪندي پي پي پي چيئرمين چيو ته نواز شريف مخالفن کي سزائون ڏيارڻ لاءِ ججن تي دٻاءُ وڌو ۽ انهن خلاف فيصلا اچڻ تي خوشيون ملهايون. هن چيو ته نااهل وزيراعظم هڪ آمر کي معافي نامو لکي ڏنو ۽ عمر قيد جي سزا ملڻ بعد اهڙي فيصلي خلاف اپيل به نه ڪئي، پر اٺن سالن کانپوءِ واپس آيو ته سموريون سزائون معاف ڪيون ويون. بلاول ڀٽو زرداري چيو ته ٽڪراءُ جي پاليسي جمهوريت ۽ ملڪ جي مفاد ۾ناهي. هن وڌيڪ چيو ته ملڪ جي اصل مسئلن جو ذڪر ئي نه ٿي رهيو آهي، پاناما ۽ اقاما جي عوام کي پرواهه ناهي، ڇاڪاڻ ته اهي عوام جا مسئلا ناهن، ۽ عوام کي ان سان به غرض ناهي ته توهان کي ڇو ڪڍيو ويو. پي پي پي چيئرمين چيو ته عوام جي مسئلن تي ڪم نه ٿي رهيو آهي، مهانگائي آسمان تي پهچي وئي آهي ۽ صحت توڙي تعليم جي صورتحال خراب آهي. هن چيو ته وفاق ، پنجاب، ڪشمير ۽ گلگت بلتستان ۾ نوازليگ جي حڪومت آهي پر پوءِ به هنن جو روڄ راڙو بند نه ٿو ٿئي. جيڪو ڪم هنن کي ڪرڻ گهرجي، سو نه ٿا ڪن پر جيڪو نه ڪرڻ گهري، اهو ڪم ڪري رهيا آهن. بلاول ڀٽو زرداري چيو ته ملڪ جا اثاثا ڀڳڙن مٺ تي وڪيا پيا وڃن، ذاتي ايئرلائين هلائي رهيا آهن ۽ قومي ايئرلائين وڪرو پيا ڪن. حالتون ڪهڙيون به هجن، پنهنجي ماءُ جا زيور نه وڪيا ويندا آهن. تقريب کي وڏي وزير مراد علي شاهه، قومي اسيمبلي ۾ اپوزيشن ليڊر خورشيد احمد شاهه، پي پي پي سنڌ جي صدر نثار احمد کهڙو، صحت جي صوبائي وزير ڊاڪٽر سڪندر منڌري ۽ NICVD جي ايگزيڪيوٽو ڊائريڪٽر ڊاڪٽر نديم قمر پڻ خطاب ڪيو، جڏهن ته تقريب ۾ سيد قائم علي شاهه، صوبائي وزير سيد ناصر حسين شاهه، سهيل انور سيال، منظور حسين وساڻ، ڄام مهتاب ڏهر، ايم اين اعجاز حسين جکراڻي، نعمان اسلام شيخ ۽ ٻيا اڳواڻ پڻ موجود هئا.

سکھر (24 فروری 2018) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے

سکھر (24 فروری 2018) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ پانچ سال سیاسی جماعت ایک شہر کو ترجیح دیتی رہی لیکن سندہ میں ان کی صوبائی حکومت نے عوام کی فلاح و بہبود پر توجہ دی، اسکول، کالج بنائے، یونیورسٹیاں قائم کیں اور 6 بڑے ہسپتال بنائے۔ سکھر میں قومی اداراہ برائے امراض قلب (این آئی سی وی ڈی) سیٹلائیٹ سینٹر کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پی پی پی چیئرمین نے کہا کہ نواز شریف نے مخالفین کو سزائیں دلانے کے لیے ججوں پر دباؤ ڈالا اور ان کےخلاف فیصلے آنے پربغلیں بجائیں۔ انہوں نے کہا کہ نااہل وزیراعظم نے ایک آمر کو معافی نامہ لکھ کردیا اور عمر قید کی سزا سنائے جانے کے بعد فیصلے کے خلاف اپیل تک نہیں کی، لیکن آٹھ سال بعد واپس آئے تو ساری سزائیں معاف کردی گئیں۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ ٹکراؤ کی پالیسی جمہوریت اور ملک کے مفاد میں نہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ملک میں اصل مسائل پر بات نہیں ہورہی، پانامہ اور اقامہ کی عوام کو پرواہ نہیں، کیونکہ یہ عوام کے مسائل نہیں اور عوام کو اس سے بھی غرض نہیں کہ آپ کو کیوں نکالا گیا۔ پی پی پی چیئرمین نے کہا کہ عوام کے مسائل پر کام نہیں ہورہا۔ مہنگائی آسمان کو چھو رہی ہے اور صحت و تعلیم کی صورتحال ابتر ہے۔ انہوں نے کہا کہ مرکز، پنجاب، کشمیر اور گلگت بلتستان میں نواز لیگ کی حکومت ہے مگر پھر بھی ان کا رونا ختم نہیں ہوتا۔ جو کام ان کو کرنا ہے وہ نہیں کرتے، جو نہیں کرنا وہ کررہے ہیں۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ ملک کے اثاثے اونے پونے داموں بیچے جارہے ہیں، ذاتی ایئرلائن چلارہے ہیں اور قومی ایئرلائن فروخت کررہے ہیں، حالات جیسے بھی ہوں، اپنی ماں کا زیور نہیں بیچا جاتا۔ تقریب کو وزیراعلیٰ مراد علی شاہ، قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید احمد شاہ، پی پی پی سندہ کے صدر نثار احمد کھڑو، صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر سکندر مرزا اور NICVD کے ایگزیکیوٹو ڈئریکٹر ڈکٹر ندیم قمر نے خطاب کیا، جبکہ سیید قائم علی شاہ، صوبائی وزراء سید ناصر حسین شاہ، سہیل انور سیال، منظور حسین وسان، جام مھتاب ڈہر، ایم این اے اعجاز حسین جکھرانی، نعمان اسلام شیخ اور دیگر رہنما بھی موجود تھے۔

سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز آصف علی زرداری نے جمعہ کے رون ایک پرائیویٹ چینل انٹرویو دیتے ہوئے

اسلام آباد(17 فروری2018)
سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز آصف علی زرداری نے جمعہ کے رون ایک پرائیویٹ چینل انٹرویو دیتے ہوئے اپنے ریمارکس جن سے یہ تاثر ملا کہ وہ بھگوڑے سابق ایس ایس پی ملیر راﺅ انوار کو سپورٹ کر رہے ہیں پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ پارٹی ترجمان سینیٹر فرحت اللہ بابر نے کہا کہ آصف علی زرداری نے یہ الفاظ سہون ادا کئے اور اگر کسی کو اس سے تکلیف پہنچی ہے تو وہ اس پر افسوس کا اظہار کرتے ہیں۔ سابق صدر نے آج ایک دوسرے ٹی وی انٹرویو میں یہ بات تسلیم کی کہ راﺅ انوار کے متعلق ان کے الفاظ سہون ادا ہوئے۔ سابق صدر نے ماورائے عدالت قتل کو مجرمانہ، قابل نفرت اور ناقابل تسلیم قرار دیا اور مطالبہ کیا کہ جو لوگ بھی اس میں ملوث ہیں انہیں انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ زبردستی غائب کر دینا اور ماورائے عدالت قتل ایک جیسے جرائم ہیں۔ یہ بات کوئی سوچ بھی نہیں سکتا کہ پاکستان پیپلزپارٹی ایسے اقدامات کی کسی بھی حالت میں سپورٹ کرے گی۔ ترجمان نے کہا کہ اس سلسلے میں پارلیمنٹ کے اندر اور باہر پارٹی کا ریکارڈ خود بولتا ہے۔ سابق صدر کو اس بات کا احساس ہے کہ گفتگو کی روانی میں ان کے الفاظ سے تکلیف پہنچی ہوگی اور وہ اس پر افسوس کا اظہار کرتے ہیں۔

ڪراچي (10 فيبروري 2018) پاڪستان پيپلز پارٽي جي چيئرمين بلاول ڀٽو زرداري ڊيرا اسماعيل خان

ڪراچي (10 فيبروري 2018) پاڪستان پيپلز پارٽي جي چيئرمين بلاول ڀٽو زرداري ڊيرا اسماعيل خان ۾ ٽارگيٽ ڪلنگ تي تمام گهڻي ڳڻتي جو اظهار ڪيو آهي. ٽارگيٽ ڪلنگ جي تازن واقعن تي افسوس جو اظهار ڪندي پي پي پي چيئرمين متاثر ڪٽنبن سان همدردي جو اظهار ڪيو ۽ چيو ته تڪليف جي هن گهڙي ۾ هو ساڻن گڏ ۽ سندن ڏک ۾ برابر جو شريڪ آهي. پي پي پي چيئرمين چيو ته اهو انتهائي افسوسناڪ آهي ته تحريڪ انصاف جي صوبائي حڪومت پنهنجون ذميواريون نڀائڻ کان لنوائي رهي آهي، جڏهن ته قاتلن کي ڇوٽ مليل آهي، جيڪي ماڻهن کي بي رحمي سان قتل ڪري رهيا آهن.

کراچی (10 فروری 2018) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے ڈیرا اسماعیل خان میں ٹارگیٹ کلنگز پر شدید تشویش کا اظہار کیا ہے

کراچی (10 فروری 2018) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے ڈیرا اسماعیل خان میں ٹارگیٹ کلنگز پر شدید تشویش کا اظہار کیا ہے۔ ڈیرا اسماعیل خان میں حالیہ ٹارگیٹ کلنگز کے نتیجے میں ہونے والی ہلاکتوں پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے پی پی پی چیئرمین نے متاثرہ خاندانوں سے ہمدردی کا اظہار کیا اور کہا کہ اس مشکل گھڑی میں وہ ان کے ساتھ اور ان کے دکھ میں برابر کے شریک ہیں۔ پی پی پی چیئرمین نے کہا کہ یہ انتھائی افسوس کا مقام ہے کہ تحریک انصاف کی حکومت اپنی ذمیداریاں نبھانے سے گریزاں ہے جبکہ ڈیرا اسماعیل خان میں قاتل دندناتے پھر رہے ہیں اور لوگوں کو بے رحمی سے قتل کر رہے ہیں۔

کراچی : پاکستان پیپلزپارٹی کی سیاسی رہنما و رکن قومی اسمبلی مسز فریال تالپور نے یوم کشمیرکے موقع پر اپنےپیغام میں کہا

 کراچی : پاکستان پیپلزپارٹی کی سیاسی رہنما و رکن قومی اسمبلی مسز فریال تالپور نے یوم کشمیرکے موقع پر اپنےپیغام میں کہا کہ پاکستان کی عوام یوم یکجہتی کشمیر کے موقع پر اپنے کشمیری بھایئوںکی جدوجہد میں ان کے ساتھ چٹان کی طرح کھڑی ہے۔ محترمہ فریال تالپور نےاپنےپیغام میں مزیدکہاکہ قائد عوام شہید ذوالفقار علی بھٹو نے پیپلزپارٹی کی بنیاد ہی مسئلہ پر رکھی اور مسئلہ کشمیر کو دنیا کے ایوانوں میں بلند کر کے بھارت کو ہر محاذ پر پسپا کیااور اب چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کی قیادت میں پاکستان کا بچہ بچہ کشمیریوں کی بھارت سے آزادی کی جدوجہد میں ان کے ساتھ ہے۔ فریال تالپور  نے کہا کہ سابق وزیراعظم پاکستان شہید محترمہ بینظیر بھٹو نے ۱۹۹۰ میں 5 فروری کو عام تعطیل کا اعلان کر کے کشمیریوں کے ساتھ نہ صرف یکجہتی کا مظاہرہ کیا بلکہ محترمہ بے نظیر بھٹو نےمظفرآباد آزاد کشمیر اسمبلی اور کونسل کے مشترکہ اجلاس کے علاوہ جلسہ عام سے خطاب کرکےکشمیریوں کو ہر ممکن تعاون کا یقین دلایا اور مہاجرین کشمیر کی آباد کاری کا وعدہ کیا۔ اس وقت سے 5 فروری کو ہر برس سرکاری طور پر یوم کشمیرکےطورپرمنا​یا جاتا ہے۔ فریال تالپور  نےپاکستان پیپلزپارٹی اور عوام کی طرف سے کشمیری بھائیوں اور بہنوں کی حق خود ارادیت کیلئے جدوجہد کی غیر متزلزل حمایت جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان اقوام متحدہ سلامتی کونسل کی قرار دادوں کی بنیاد پر جموں و کشمیر کے تنازعہ کے منصفانہ اور پرامن انداز میں حل کیلئے پرعزم ہے، مسئلہ کشمیر کے منصفانہ حل سے ہی جنوبی ایشیاء میں پائیدار امن قائم کیا جاسکتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کے وعدوں اور بین الاقوامی برادری کی پیہم کوششوں کے باوجود کشمیریوں کو ان کا بنیادی حق دینے سے انکار کیا جارہا ہے۔ حق خودارادیت کے ذریعے اپنے مستقبل کا فیصلہ کشمیریوں کا پیدائشی حق ہے اور اس حق کے حصول کی جدوجہد میں پاکستان کی تمام حکومتیں اور عوام اپنے کشمیری بھائیوں اور بہنوں کو غیر متزلزل حمایت جاری رکھیں گے ۔فریال تالپورنے کہا کہ وہ کشمیریوں کے اس بہادرانہ جذبے کو خراج تحسین پیش کرتی ہیں جو گزشتہ 7 دہائیوں سےبھارتی مظا لم کا سامنا کرنے کے باوجود سرد نہیں پڑا۔بھارت کی جانب سےکشمیریوں کے بنیادی انسانی حقوق کی شدید خلاف ورزیوں نے بین الاقوامی برادری کو اس عمل کی مذمت پر مجبور کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ بات سب کے علم میں ہے کہ جموں و کشمیر کے بے گناہ عوام بھارتی سیکیورٹی فورسزکے 7 لاکھ سے زائد اہلکاروں کے ہاتھوں انسانی حقوق کی بدترین خلاف ورزیوں کا نشانہ بن رہے ہیں ،لاکھوں کشمیری اپنی جانیں قربان کرچکے ہیں ،ہزاروں لاپتہ کردیئے گئے ہیں اور بھارتی سیکورٹی فورسز کشمیری خواتین کی بےحرمتی میںملوث ہیں۔ محترمہ فریال تالپور نے مسئلہ کشمیر کے فوری حل پر زور دیتے ہوئے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل ‘ سلامتی کونسل کے ارکان اور بین الاقوامی برادری سے پر زور مطالبہ کیا کہ کشمیرکے مسئلے کے حل میں اپنا کردار  ادا کریں۔ مسئلہ کشمیر کے منصفانہ حل سے ہی جنوبی ایشیاء میں پائیدار امن قائم کیا جاسکتا ہے ۔فریال تالپورنے کشمیری عوام کو یقین دلایا کہ پاکستان کے عوام ان کی غیر متزلزل حمایت ہمیشہ جاری رکھیں گے، انہوں نے کہا کہ پاکستانیوں کے دل کشمیری بھائیوں کے ساتھ دھڑکتے ہیں مجھے یقین ہے کہ وہ دن دور نہیں جب کشمیری اپنی منزل حاصل کرلیں گے۔

سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری نے یوم کشمیر کے موقع پر کہا ہے

اسلام آباد(4فروری 2018)
سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری نے یوم کشمیر کے موقع پر کہا ہے کہ پاکستان پیپلزپارٹی کشمیریوں کی حمایت جاری رکھے گی۔ انہوں نے بہادر کشمیریوں کی عظیم جدوجہد کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ اقوام متحدہ کو چاہیے کہ وہ اس مسئلے کے حل کے لئے ٹھوس اقدامات لے تاکہ کشمیریوں پر مصائب کا خاتمہ ہو اور خطے میں امن قائم ہو۔ انہوں نے کہا کہ سات دہائیوں پہلے کشمیریوں سے کیا گیا وعدہ پورا نہیں کیا گیا اور اب وقت آگیا ہے کہ اقوام متحدہ اپنے وعدے کو پورا کرے اور کشمیریوں کو حق خود ارادیت دلائے۔ انہوں نے کہا کہ ایسا کرنا خطے اور عالمی امن کے لئے اشد ضروری ہے۔ یوم کشمیر کے موقع پر اپنے پیغام میں سابق صدر نے کہا کہ حق خودارادیت بنیادی حقوق میں سے ایک ہے جو اقوام متحدہ کے چارٹر میں بھی موجود ہے اور اس حق کو تاخیری یا کسی اور حربے سے غصب نہیں کیا جا سکتا۔ پاکستان پیپلزپارٹی عوام کے بنیادی حقوق کے احترام کے لئے مخلص ہے اور چاہتی ہے کہ کشمیر کا ایک منصفانہ، پرامن اور باعزت حل نکلے جو کشمیریوں کی آرزوﺅں اور امنگوں کے مطابق ہو۔ سابق صدر نے کشمیریوں کی عظیم جدوجہد کے دوران قربانیاں دینے والوں کو زبردست خراج عقیدیت اور خراج تحسین بھی پیش کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہم اقوام متحدہ کی جانب سے کروڑوں لوگوں کو آزدی دلانے اور دنیا سے نوآبادیات ختم کرنے کا خیرمقدم کرتے ہیں لیکن ہم اس بات پر حیرت زدہ ہیں کہ سات دہائیوں سے مسئلہ کشمیر اب تک حل نہیں ہو سکا۔

سانگھڑ سے فنکشنل مسلم لیگ کے کے سابق ایم پی اے امام الدین شوقین کی آصف علی زرداری سے ملاقات ۔

             امام الدین شوقین فنکشنل لیگ چھوڑ کر پیپلز پارٹی میں شامل ۔  امام الدین شوقین کا پیپلزپارٹی کی قیادت پر اعتماد کا اظہار ۔  آصف علی زرداری کا امام الدین شوقین کی پارٹی میں شمولیت کا خیرمقدم ۔