Archive for July, 2018

کراچی (29 جولائی 2018) پی پی پی سندھ کے جنرل سیکریٹری وقار مہدی نے این اے-230 پر ہونے والی گنتی کے دوران پی پی پی امیدوار رسول بخش چانڈیو کے ووٹوں میں اضافے کے بعد جی ڈی

کراچی (29 جولائی 2018) پی پی پی سندھ کے جنرل سیکریٹری وقار مہدی نے این اے-230 پر ہونے والی گنتی کے دوران پی پی پی امیدوار رسول بخش چانڈیو کے ووٹوں میں اضافے کے بعد جی ڈی اے کی امیدوار فھمیدہ مرزا اور ان کے شوہر ذوالفقار مرزا کا بوکھلاہٹ کا شکار ہوکر آر او آفس کے عملے کو دھونس دھمکیاں دینے کی شدید مذمت کی ہے۔ اپنے بیان میں وقار مہدی نے کہا کہ ذوالفقار مرزا نے آر او آفس کے عملے کو ہرساں کرتے ہوئے مغلظات بھی بکیں، جو کسی سیاسی آدمی کا رویہ نہیں ہو سکتا۔ وقار مہدی نے کہا کہ الیکشن کمیشن و انتظامیہ کو مرزا فئملی کے اس عمل پر ایکشن لینا چاہیئے۔ انہوں نے کہا کہ مرزا فئملی دھاندھلی کے ذریعے دو سیٹوں پر کامیاب ہوئی تھی، جو ووٹوں کی دوبارہ گنتی میں ظاہر ہو رہی ہے۔ وقار مہدی نے نشاندھی کرتے ہوئے کہا کہ این اے-230 اور پی ایس 73 کی 9 پولنگ اسٹیشنز کی دوبارہ گنتی کے دوران قومی اسمبلی کے حلقے پر 64 اور صوبائی حلقے پر 104 ووٹوں کا اضافہ ہوا، جس کو دیکھ کر مرزا نے عملے کو دھمکیاں دیں اور ہنگامہ کیا، جس کے باعث گنتی کا عمل بھی روک دیا گیا۔ وقار مہدی نے کہا کہ رسول بخش چانڈیو کو الیکشن کے دن پولنگ کے بعد آنے والے غیرسرکاری نتائج میں واضح اکثریت حاصل تھی، حتیٰ کہ مختلف ٹی وی چینلز نے ان کی کمیابی کی خبریں بھی نشر کردیں تھیں، لیکن بعد ازاں رات دیر سے انہیں کہا گیا کہ وہ چند سو ووٹوں سے ہار گئے ہیں۔ وقار مہدی نے مطالبہ کیا کہ مرزا فیملی کی جانب سے الیکشن عملے کو ہراساں کرنے کے باوجود پولیس و انتظامیہ کی جانب سے ذوالفقار مرزا اور ان کے بیٹوں کے خلاف ایکشن نہ لینا قابل مذمت و تشویش ناک اقدام ہے۔

ترجمان چیئرمن پی پی پی مصطفی نواز کھوکھر کا عمران خان کی تقریر پر ردعمل

عمران خان پہلے اپنی کارکردگی بتائیں پھر الزام لگائیں، ترجمان بلاول بھٹو

افسوس کے عمران خان خود کو قومی لیڈر کہتے ہیں اور بات کرنے کا ڈھنگ نہیں سیکھے، سینیٹر مصطفی نواز کھوکھر

عمران خان کی تقریر کا نوے فیصد گالم گلوچ اور الزام تراشی پر مبنی ہے، ترجمان بلاول بھٹو

عمران خان دس فیصد اپنی ذات پر بات کرتے ہیں، کارکردگی کا کوئی ذکر نہیں، سینیٹر مصطفی نواز کھوکھر

اگر خیببرپختونخواہ میں کچھ کیا ہوتا تو عمران خان گالم گلوچ کے بجائے اس کا ذکر کرتے ، ترجمان بلاول بھٹو

حیران ہیں کہ عمران خان کی کیسی انتخابی مہم ہے جس میں منشور کا کوئی ذکر نہیں، سینیٹر مصطفی نواز کھوکھر

عمران خان بتائیں کہ اگر کے پی کے حالات اچھے ہوئے تو دوسرے صوبوں میں گئے کتنے پشتون بھائی اپنے صوبے واپس آئے، ترجمان بلاول بھٹو

الزامات کی سیاست نے پنجاب میں عمران خان کے جلسوں کی کرسیاں خالی کر دی ہیں، سینیٹر مصطفی نواز کھوکھر

ایمپائر کی انگلی کی حقیقت کھلنے کے بعد عمران خان کی سیاست بھی ختم کو جائے گی، ترجمان بلاول بھٹو

سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ پاکستان پیپلزپارٹی کی قیادت اور کارکن جمہوریت کے لئے آگ کے دریا عبور کئے ہیں

سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ پاکستان پیپلزپارٹی کی قیادت اور کارکن جمہوریت کے لئے آگ کے دریا عبور کئے ہیں اور اپنی جانیں دے کر سرخرو ہوئے ہیں۔ آج جب جمہوریت مستحکم ہو رہی ہے تو اس کے لئے پیپلزپارٹی کی لازوال قربانیاں ہیں۔ شہدادپور میں ذوالفقار خادم زرداری کی رہائش گاہ پر پارٹی کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے آصف علی زرداری نے کہا کہ 2008ءمیں پاکستان پیپلزپارٹی کے پاس پارلیمنٹ میں مکمل اکثریت نہیں تھی اس کے باوجود ڈکٹیٹر پرویز مشرف کو اقتدار چھوڑنے پر مجبور کیاتاکہ دنیا میں پاکستان کا جمہوری چہرہ سامنے آئے۔ انہوں نے کہا کہ میری پہلی ترجیح 1973ءکے آئین کی بحالی کی تھی جس کے لئے محترمہ بینظیر بھٹو شہید نے ساری زندگی جدوجہد کی تھی۔ پیپلزپارٹی کے کارکنوں نے پھانسیاں قبول کی تھیں، جیل کی تکلیفیں ا ورکوڑے برداشت کئے تھے۔ الحمدللہ 1973ءکا آئین اصل صورت میں بحال ہوا۔ آصف علی زرداری نے کہا کہ صوبوں کو خود مختاری دینے کا وعدہ قائدعوام ذوالفقار علی بھٹو شہید نے کیا تھا۔ پیپلزپارٹی نے بھی یہ وعدہ پورا کیا۔ آصف علی زرداری نے کہا کہ پیپلزپارٹی شہید ذوالفقار علی بھٹو کے ہر خواب کی خوبصورت تعبیر کے لئے جدوجہد کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کچھ بونے اور عقل سے خالی عناصر کہتے ہیں کہ پیپلزپارٹی نے روٹی، کپڑا اور مکان کا وعدہ پورا نہیں کیا۔ آصف علی زرداری نے کہا کہ پیپلزپارٹی جب بھی اقتدار میں آتی ہے تو نوجوانوں کو ملازمتیں فراہم کرتی ہے، روزگار ہو تو روٹی اور کپڑا بھی میسر ہوتا ہے اور مکان بھی بن جاتا ہے۔ آصف علی زرداری نے کہا کہ بلاول بھٹو زرداری نے اپنے نانا شہید ذوالفقار علی بھٹو اور والدہ شہید کا علم سنبھال لیا ہے۔ یقینا بلاول بھٹو زرداری اپنی والدہ کے مشن کو پایہ تکمیل تک پہنچائیں گے۔ وہ دن دور نہیں جب ہر نوجوان کو روزگار ملے گا، ریاست کے ثمرات ہر شہری کو ملیں گے۔ ملک کے تمام شہریوں کے ساتھ سماجی انصاف ہوگا، طبقاتی امتیاز کا خاتمہ ہوگا۔ آصف علی زرداری نے کہا کہ عوام کی مدد سے انتخابات جیت کر جب اقتدار میں آئے تو پارٹی منشور کے ایک ایک نکتے پر عمل کریں گے۔ سابق صدر آصف علی زرداری نے سابق ایم این اے روشن علی جونیجوکی رہائش گاہ پر جا کر ان کے صاحبزادے عباس جونیجو کے انتقال پر تعزیت کی۔

ملتان میں علی موسی گیلانی پر مخالفین کی فائرنگ بوکھلاہٹ کا ثبوت ہے، بلاول بھٹو زرداری

گولیاں، رکاوٹیں اور پابندیاں پاکستان پیپلزپارٹی کا راستہ نہیں روک سکتیں، بلاول بھٹو زرداری

انتظامیہ ایف آئی آر میں نامزد ملزمان کو کیفرکردار تک پہنچائے، بلاول بھٹو زرداری

پی پی کے عوامی نمائندوں کی سیکیورٹی کو یقینی بنایا جائے، بلاول بھٹو زرداری

پنجاب کے نظریاتی بحران کو دور کرنے کی میری جدوجہد سے سیاسی یتیم اوچھے ہتکھنڈوں پر اتر آئے ہیں، بلاول بھٹو زرداری
بلاول بھٹو زرداری کی طرف سے واقعے کی شدید مذمت

چئیرمین پی پی پی بلاول بھٹو زرداری کا شہید شاہنواز بھٹو کے 33ویں یوم شہادت پر انھیں خراج عقیدت۔

چئیرمین پی پی پی بلاول بھٹو زرداری کا شہید شاہنواز بھٹو کے 33ویں یوم شہادت پر انھیں خراج عقیدت۔

شہید شاہنواز بھٹو جوانی میں ضیا الحق کی آمریت سے لڑتے ہوئے شہید کردئے گئے۔

شاہنواز کی پرامن جمہوری جدوجہد ضیاالحق کی آنکھوں میں کھٹکتی رہی۔

شہید شاہنواز بھٹو کی جدوجہد اور قربانی صدیوں یاد رکھی جائے گی۔

شہید شاہنواز بھٹو کارکنان کے دماغ اور دلوں میں بستے ہیں۔

پی پی پی شہداہ کی جماعت ہے جہاں کارکنان نے جمہوریت کے لیے لازوال قربانیاں دیں۔

مرکزی ترجمان پاکستان پیپلز پارٹی سینیٹر مولابخش چانڈیو کے نگران حکومت اور الیکشن کمیشن سے چند سوالات

مرکزی ترجمان پاکستان پیپلز پارٹی سینیٹر مولابخش چانڈیو کے نگران حکومت اور الیکشن کمیشن سے چند سوالات

نگران حکومتیں بتائیں کہ انتخابات کا فیصلہ عوام نے کرنا ہے کہ دہشتگردوں نے ؟، مولابخش چانڈیو سیکریٹری اطلاعات پی پی پی

دہشتگرد جن پر حملہ آور ہیں انہیں ہی انتخابی مہم سے روکا جا رہا ہے، مولابخش چانڈیو

نگران حکومتیں اپنی ناکامی کا اعتراف کرے یا پھر چیئرمن بلاول بھٹو کو سیکیورٹی فراہم کرے، مولابخش چانڈیو

خیبرپختوںخواہ میں چیئرمن بلاول بھٹو کو سرگرمیوں سے روک کر انتخابات کو مشکوک بنا دیا گیا ہے، مولابخش چانڈیو

دہشتگرد دھکماتے ہیں تو حکومت سیکیورٹی دینے کے بجائے گھر سے نہ نکلنا کا مشورہ دیتی ہے، مولابخش چانڈیو

نگرانوں کا کام انتخابات کو محفوظ اور پر امن بنانا ہے کہ دہشتگردوں کی ڈکٹیشن لینا ؟، مولابخش چانڈیو

سوائے ایک کے دیگر سیاستدانوں کو انتخابی مہم چلانے دینا دہشتگردوں کی ڈکٹیشن قبول کرنے کے مترادف ہے، مولابخش چانڈیو

یہ کیسے ہو سکتا ہے کہ ایک سیاسی لیڈر کو ہر جگہ جلسوں کی اجازت ہو اور دوسروں کو روکا جائے، مولابخش چاںڈیو

کہیں نہ کہیں کوئی نہ کوئی گٹھ جوڑ ضرور ہے، نگران اور الیکشن کمیشن اس گٹھ جوڑ کا پتا لگائیں، مولابخش چانڈیو

دو ہزار تیرہ میں بھی ایسے ھی ھوا تھا اور پی پی پی کو صرف سندھ تک محدود رکھا گیا تھا

ایک بیان جاری کرکے اپنی پسندیدہ جماعتوں کو انتخابی مہم کی اجازت دی تھی، مولابخش چانڈیو

الیکشن کمیشن اگر اب بھی خاموش رہی تو پھر انتخابی نتائج کوئی بھی تسلیم نہیں کرے گا، مولابخش چانڈیو

پی پی پی نہ پہلے ڈری نہ اب ڈریں گے، لیکن سب کو مساوی مواقع فراہم کرنا ریاست کی ذمہ داری ہے، مولابخش چانڈیو

ملاکنڈ میں بلاول بھٹو کے جلسے کی منسوخی کے باوجود ہزاروں کارکن جمع ہو گئے

ملاکنڈ میں بلاول بھٹو کے جلسے کی منسوخی کے باوجود ہزاروں کارکن جمع ہو گئے

بلاول بھٹو کا سانحہ مستونگ کے شہدا کے سوگ میں سیاسی تقریر کرنے سے معذرت

پوری قوم سوگ میں ہے، سیاسی تقریر نہیں ہو پائے گی، بلاول بھٹو

دہشتگرد مسلسل ہم پر وار کر رہے ہیں ،بلاول بھٹو

ہمیں دہشتگردوں کو ملکر شکست دینی ہے، بلاول بھٹو

دہشتگرد ہمیں روک رہے ہیں قوم ہمارے ساتھ ہے، بلاول بھٹو

اب میں انتخابات کے بعد ملاکنڈ آئوں گا، بلاول بھٹو

دہشتگردوں کے خلاف ووٹ دیں تیر پر ٹھپہ لگائیں، بلاول بھٹو

مین 25 جولائی کے بعد واپس آئوں گا ہم اپنی جیت اور دہشتگردی کی شکست جا جشن منائیں گے، بلاول بھٹو

 بلور فیملی اور عوامی نیشنل پارٹی سے اظہاریکجہتی کے لیے بلاول بھٹو زرداری کا آج سیاسی سرگرمیاں اور کل پشاور کا جلسہ معطل کرنے کا اعلان

بلور فیملی اور عوامی نیشنل پارٹی سے اظہاریکجہتی کے لیے بلاول بھٹو زرداری کا آج سیاسی سرگرمیاں اور کل پشاور کا جلسہ معطل کرنے کا اعلان

شہید بشیر بلور کے صاحبزادے ہارون بلور کے قتل کا غم ناقابل بیان ہے، بلاول بھٹو زرداری

سانحات کا نہ ختم ہونے والا سلسلہ انتہاپسندی کے مقابلے میں ناگزیر قومی اتفاق رائے کی جانب دعوت دے رہا ہے، بلاول بھٹوزرداری