Archive for March, 2019

کراچی (23 مارچ 2019) پاکستان پیپلز پارٹی سندھ نے کراچی سے گڑھی خدابخش بذریعہ ریل ‘کاروانِ بھٹو’ کا حتمی شیڈیول جاری کرتے ہوئے کہا ہے

کراچی (23 مارچ 2019) پاکستان پیپلز پارٹی سندھ نے کراچی سے گڑھی خدابخش بذریعہ ریل ‘کاروانِ بھٹو’ کا حتمی شیڈیول جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ چیئرمین بلاول بھٹو زرداری 26 مارچ کی صبح کراچی سے اپنے سفر کا آغاز کریں گے اور 27 مارچ کی شام لاڑکانہ پہنچیں گے، جبکہ کارکنان و عوام راستے میں آنے والے ریلوے اسٹیشنز پر اپنے محبوب چیئرمین کا والہانہ استقبال کریں گے۔ پی پی پی سندھ کے صدر نثار احمد کھڑو، سابق وزیراعلیٰ سید قائم علی شاہ، وقار مہدی، راشد ربانی، سریندر ولاسائی، نوید انتھونی اور نعمان شیخ نے میڈیا سیل بلاول ہاوَس میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پارٹی کے بانی چیئرمین شہید ذوالفقار علی بھٹو کا 40 واں یومِ شہادت انتھائی عقیدت و احترام سے منایا جائیگا اور ملک بھر سے لاکھوں جیالے گڑھی خدابخش جمع ہوکر خراج عقیدت پیش کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ فضائی راستے بند ہونے کی وجہ سے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے بذریعہ ٹرین گڑھی خدابخش جائیں گے، اس سفر کا نام ‘کاروانِ بھٹو’ رکھا گیا ہے اور مذکورہ فیصلے کے بعد کارکنان میں خوشی کی لہر دوڑ گئی ہے۔ پریس کانفرنس کے دوران صحافیوں کے مختلف سوالات کے جواب دیتے ہوئے نثار احمد کھڑو نے واضح کیا کہ 26 مارچ سے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا شروع ہونے والا کاورانِ بھٹو کوئی احتجاجی مارچ نہیں ہے، اگر مارچ کرنے کی ضرورت ہوئی تو اس کے متعلق کوئی بھی فیصلہ فقط پارٹی کرے گی۔ ایک سوال کے جواب میں قائم علی شاہ نے کہا کہ حکومت کی جانب سے پارٹی پر دباوَ ڈالنے کے لیئے مختلف حربے استعمال کیئے جا رہے ہیں، لیکن پاکستان پیپلز پارٹی ماضی میں بھی اس طرح کے ہتھکنڈوں کا سامنا کرتی رہی ہے۔

سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹرین کے صدر آصف علی زرداری نے یوم پاکستان کے موقع پر اپنے ایک پیغام میں کہا ہے

سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹرین کے صدر آصف علی زرداری نے یوم پاکستان کے موقع پر اپنے ایک پیغام میں کہا ہے کہ ملک کی سلامتی، آزادی اور خودمختاری کے لئے ہر طرح کی قربانی کے لئے تیار ہیں۔ آج کے دن ہمیں بابائے قوم قائداعظم محمد علی جناح کے فلسفے پر من و عن عمل کرنے کی یاددہانی کراتا ہے۔ سابق صدر نے کہا کہ ہمیں قائداعظم کے ان ساتھیوں کی خدمات کو بھی یاد رکھنا چاہیے جنہوں نے قیام پاکستان کے لئے قائداعظم کا ساتھ دیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ قائداعظم کے فلسفے پر عمل کرنے سے ہی ملک میں سیاسی استحکام آئے گا۔ قوم کو نسلی امتیاز، فرقہ وارانہ تعصب جیسی بیماریوں سے نجات حاصل کرنا ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ بدقسمتی کی بات یہ ہے کہ پے در پے آمریتوں نے قائداعظم کے اصولوں کی نفی کرتے ہوئے معاشرے میں نفرت کا زہر گھولا اور طاقت کے ذریعے کمزور طبقات کو کچلنے کے لئے ملک کو تختہ مشق بنا دیا۔ آصف علی زرداری نے کہاکہ الحمدللہ آج پاکستان دفاعی طور پر مضبوط اور مستحکم ہے۔ افواج پاکستان کے جوان سرحدوں پر دن رات پاک سرزمین کی حفاظت کی ذمے داری نبھا رہے ہیں۔ ہمیں اس بات کو ہرگز نظرانداز نہیں کرنا چاہیے کہ قائدعوام ذوالفقار علی بھٹو شہید نے ایٹمی پاکستان کی بنیاد رکھی تھی جبکہ محترمہ بینظیر بھٹو شہید نے ملک کے دفاع کے لئے میزائل ٹیکنالوجی کا تحفہ دیا تھا۔ انہوں نے اس ضرورت پر زور دیا کہ آج کا دن اس عہد کی بھی تجدید کرتا ہے کہ ملک پر ملائیت کا غلبہ ہونے نہیں دیا جائے گا۔ اس سوچ کو شکست دینا ہوگی جو جنگجوﺅں کو اپنی طاقت سمجھتے ہیں۔ ان جنگجوﺅں نے ریاست کی رٹ کو پامال کرتے ہوئے قوم پر اپنی مرضی تھوپنے کے لئے آگ اور خون کی ہولی کھیلی۔ آصف علی زرداری نے کہا کہ قائداعظم کے پاکستان میں قائداعظم کی فلاسفی پر عمل ہوگا جس کے لئے پاکستان پیپلزپارٹی جدوجہد کرتی رہی ہے اور کرتی رہے گی۔

کراچی / اسلام آباد (22 مارچ 2019) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے عوام پر زور دیا ہے کہ وہ بانیانِ مملکت خداداد کے ویژن سے تجدید عہد ن

کراچی / اسلام آباد (22 مارچ 2019) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے عوام پر زور دیا ہے کہ وہ بانیانِ مملکت خداداد کے ویژن سے تجدید عہد نو کرنے اور ثابتقدم رہنے پر زور دیتے ہوئے نظریئہ پاکستان کی جڑوں پر کلہاڑے مارنے والے عناصر کو متنبہ کیا ہے کہ وہ اب اِس سے باز آجائیں۔ یومِ پاکستان کے موقعے پر جاری کردہ اپنے پیغام میں پی پی پی چیئرمین نے کہا کہ چند افراد کے مفادات کی خاطر ایسے اصول نہیں بنائے جاتے جو بالاخر عالمی و علاقائی سطح پر آنی والی تبدیلیوں کے نتیجے میں غبار بن کر اُڑ جائیں، بلکہ باوقار قومیں ہمیشہ اپنے قومی مفادات اور عوام کی بھبود کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے ایک مضبوطہ بیانیہ اختیار کرتی ہیں۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ یوم پاکستان ہماری اس اہم ترین ذمیداری کی یاد دہانی کراتا ہے کہ ہمیں اپنے بانی اجداد کی پیروی کرتے ہوئے ایک ایسا جمہوری معاشرہ بنانا ہے، جہاں کے نظام کا طرہ امتیاز امن، انصاف و انسانی حقوق کا احترام ہو۔ انہوں نے کہا کہ انتہا پسندی و دہشت گردی سے پوری قوم زخمی ہے اور تاحال سنگین خطرات منڈلا رہے ہیں، جن کا سامنا کرنے کے لیئے اٹل ارادوں کی ضرورت ہے کیونکہ دِکھاوے اور ایڈہاک بنیادوں پر بنائی گئی پالیسیز ہمیشہ بئک فائر کرجاتی ہیں. بلاول بھٹو زرداری نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ نظریئہ پاکستان اور آٹھ دہائیاں قبل منظور کی جانی والی قرارداد پاکستان کے حقیقی علمبردار کی حیثیت میں، ان کی پارٹی تمام مشکلات، ناانصافیوں اور انتقامی کاروائیوں کا مقابلہ کرکے قائداعظم محمد علی جناح، شہید ذوالفقار علی بھٹو اور شہید محترمہ بینظیر بھٹو کے ایک پرامن، ترقی پسند اور خوشحال پاکستان کا خواب پورا کرکے دم لے گی.

بلاول بھٹو کا خود پر ملک دشمنی کے الزامات لگانے والوں کو کھرا جواب

بلاول بھٹو کا خود پر ملک دشمنی کے الزامات لگانے والوں کو کھرا جواب

بھاڑ میں جائے تمہارا بیانیہ، بلاول بھٹو زرداری

کیا اب زندگی ایک فاشسٹ سکرپٹ ڈرامہ ہے، بلاول بھٹو زرداری

ایسا ڈرامہ کہ آپ اگر اس سکرپٹ کے مطابق نہیں چلے تو غدار قرار دئے جائو گے، بلاول بھٹو زرداری

بھاڑ میں جائیں آپ اور آپ کا یہ بیانیہ، بلاول بھٹو زرداری

میرا ایک نظریہ ہے جو میرا اپنا نظریہ ہے، بلاول بھٹو زرداری

میرا نظریہ نہیں بدلے گا آپ کا بیانیہ بدلتا رہے گا، بلاول بھٹو زرداری

پڑھیں، سوچیں اور پھر بولیں ، بلاول بھٹو زرداری

فاشزم پھیلانے والوں کو نظرانداز کریں جو ملک کے ساتھ کھیل رہے ہیں، بلاول بھٹو زرداری

کراچی (16 مارچ 2019) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ ملک اس وقت سنگین سیاسی، معاشی، سفارتی اور انسانی حقوق کے بحران کا شکار ہے

کراچی (16 مارچ 2019) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ ملک اس وقت سنگین سیاسی، معاشی، سفارتی اور انسانی حقوق کے بحران کا شکار ہے، غریب عوام مہنگائی کی سونامی میں ڈوب چکی، جبکہ خان صاحب کے تمام واعدے جھوٹ ثابت ہورہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے وزیراعلیٰ ہاوَس میں منعقدہ پی پی پی سندھ کاوَنسل کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں شہید ذوالفقار علی بھٹو کا یومِ شہادت بھرپور انداز میں منانے کے لیئے غور و خوض کے لیئے منعقد کیا گیا تھا۔ اجلاس ے خطاب کرتے ہوئے پی پی پی چیئرمین نے کہا کہ شہید ذوالفقار علی بھٹو کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیئے 4 اپریل کو گڑھی خدابخش میں تاریخی عظیم الشان جلسہ منعقد کیا جائیگا۔ انہوں نے اجلاس میں موجود شرکاء سے مشورا کرتے ہوئے پوچھا کہ وہ بتائیں کہ شہید ذوالفقار علی بھٹو کی برسی میں شرکت کے لیئے وہ بذریعہ روڈ جائیں یا ٹرین۔ بلاول بھٹو زرداری نے ملکی صورتحال پر بات کرتے ہوئے کہا کہ سلیکٹڈ وزیراعظم گجرات کے قصائی مودی کے خلاف بات کرنے کے لیئے تیار نہیں ہیں۔ بھارتی پائیلٹ کو تو این آر او کرکے بھیج دیا گیا لیکن ملک کی حزبِ اختلاف کے خلاف جھوٹے مقدمات چلائے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایک طرف بھارت، ایران، افغانستان اور دیگر ممالک سے تعلقات کشیدہ ہیں، تو دوسری جانب ملک کے داخلی معاملات بد سے بدترین ہو رہے ہیں۔ سلیکٹڈ حکومت کی جانب سے سیاست، اظہار رائے اور صحافت کی آزادی اور سویلین بالادستی پر حملے کیئے جا رہے ہیں۔ بجلی اور گیس سمیت بنیادی ضروریات کی اشیاء کی قیمتو٘ میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔ تحریک انصاف کی حکموت کو تاحال معلوم نہیں کہ اسے آئی ایم ایف سے کیا بات کرنی چاہیئے۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ ملک میں انسانی حقوق کا بحران بھی شدید ہے۔ جن اداروں کو انسانی حقوق کا تحفظ کرنا تھا، وہ ادارے ہی ناانصافی پر تلے ہئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 2018ع کے عام انتخابات میں بدرترین دھاندھلی کی گئی۔ مجھے لیاری اور مالاکنڈ سے ہرایا گیا، جبکہ لاڑکانہ کی عوام ان قوتوں کی سازش ناکام بنا دی، جو مجھے پارلیامینٹ میں دیکھنا نہیں چاہتی تھیں۔ مجھے آج تک الیکشن کمیشن کی جانب سے فارم 45 اور فارم 47 نہیں دیئے گئے۔ پی پی پی چیئرمین نے مزید کہا کہ سندھ کی عوام کو سلام کرتا ہوں، جنہوں نے صوبے میں دھاندھلی کی سازش ناکام بنائی۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان نے سندھ کی عوام کے 120 ارب روپے روک کر ڈاکہ زنی کی ہے۔ یہ وہ پیسے تھے جو صوبے میں تعلیم، صحت اور انفرا اسٹرکچر پر خرچ ہونے تھے۔ پی پی پی چیئرمین نے کہا کہ تحریک انصاف طالبان اور دیگر انتھاپسندوں کو بھتہ دیتی رہی۔ گذشتہ انتخابات میں کالعدم تنظیموں کو اس لیئے لایا گیا تاکہ خان صاحب کو جتوایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ چند روز قبل انہوں نے وفاقی حکومت سے نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کو یقینی بنانے کے لیئے مشترکہ پارلیمانی کمیٹی بنانے اور کالعدم تنظیموں سے تعلقات رکھنے والے تین وزراء کو ہٹانے کا مطالبہ کیا تھا۔ اگر میرے مطالبے پورے نہ کیئے گئے تو ہم حکومت کے کسی ایکشن کی حمایت نہیں کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ قانون اگر طاقتور ہے تو طالبان اور شہید محترمہ بینظیر بھٹو کے قاتلوں کو کیوں گرفتار نہیں کرتا۔ شہید محترمہ بینظیر بھٹو اور صدر آصف علی زرداری کو ایک فون کال پر سزا سنانے والی قوتیں دنیا کو کیسے اپنا چہرہ دکھائیں گے؟۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے ارکانِ اسمبلی، وزراء اور رہنماوَں کو ہراساں کرکے دباوَ ڈالا جا رہا ہے۔ اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کو اسلام آباد سے گرفتار کیا گیا اور ان کے گھر پر چھاپے کے نام پر چادر و چودیواری کا تقدس پائمال کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح کی تمام انتقامی کاروایوں کے باوجود پاکستان پیپلز پارٹی 1973ع کے دستور اور 18ویں ترمیم پر کسی مصلحت کا شکار نہیں ہوگی۔ پاکستان پیپلز پارٹی نے ضیاء کی آمریت، انتھاپسندوں کی دہشتگردی اور جنرل مشرف کے جبر کا سامنا کیا اور اب بھی عوام دشمن سازشوں کا مقابلہ کرنے کے لیئے تیار ہے

پی پی پی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کی جانب سے نیوزیلینڈ میں مساجد پر حملوں کی شدید الفاظ میں مذمت

پی پی پی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کی جانب سے نیوزیلینڈ میں مساجد پر حملوں کی شدید الفاظ میں مذمت

 دہشتگردی کی مصیبت اب براعظمی سرحدیں بھی پار کرچکی ہے: بلاول بھٹو زرداری

دہشتگردی سے عالمی امن کو جتنا خطرہ آج ہے، پہلے کبھی نہ تھا: بلاول بھٹو زرداری

اس وقت عالمی برادری کی جانب سے دہشتگردی کے خلاف سنجیدہ اور مربوط اقدامات کی ضرورت ہے: بلاول بھٹو زرداری

 بلاول بھٹو زرداری کی جانب سے کرسٹ چرچ سٹی میں کے شہداء کے لواحقین سے اظہارِ ہمدردی و یکجہتی

 پاکستان کی عوام اور پیپلز پارٹی شہداء کے لواحقین کے دکھ میں برابر کی شریک ہیں: بلاول بھٹو زرداری

سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدرآصف علی زرداری اور پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے پیپلزپارٹی کے رہنما اور آزاد کشمیر کے سابق وزیر عبدالسلام بٹ کے انتقال پر گہرے رنج و غم اور صدمے کا اظہار کیا ہے

سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدرآصف علی زرداری اور پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے پیپلزپارٹی کے رہنما اور آزاد کشمیر کے سابق وزیر عبدالسلام بٹ کے انتقال پر گہرے رنج و غم اور صدمے کا اظہار کیا ہے۔ عبدالسلام بٹ جمعہ کے روز مکہ مکرمہ میں انتقال کر گئے تھے۔ آصف علی زرداری اور بلاول بھٹو زرداری نے مرحوم عبدالسلام بٹ کی پارٹی کے لئے خدمات کو سراہتے ہوئے کہا ہے کہ ان کے انتقال سے پارٹی ایک بہادر اور ثابت قدم جیالے سے محروم ہوگئی ہے۔ پارٹی قائدین نے مرحوم عبدالسلام بٹ کے خاندان سے اظہار تعزیت کرتے ہوئے کہا ہے کہ دکھ کی اس گھڑی میں پیپلزپارٹی آپ کے ساتھ غم میں برابر کی شریک ہے۔ آصف علی زرداری اور بلاول بھٹو زرداری نے مرحوم عبدالسلام بٹ کی مغفرت اور ان کے اہل خانہ کے لئے صبر جمیل کی دعا بھی کی۔

 

 

 

سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری نے خواتین کے عالمی دن کے موقع پر اپنے پیغام میں کہا ہے

سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری نے خواتین کے عالمی دن کے موقع پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ پاکستان پیپلزپارٹی قائدعوام ذوالفقار علی بھٹو شہید اور محترمہ بینظیر بھٹو شہید کے نقش قدم پر چلتے ہوئے معاشرے میں خواتین کو باوقار مقام دلانے کے لئے جدوجہد جاری رکھے گی۔ سابق صدر نے کہا کہ پاکستان میں خواتین کا تاریخی کردار رہا ہے۔قائد عوام ذوالفقار علی بھٹو شہید نے پالیمنٹ میں خواتین کو نمائندگی دینے کا حق دیا تھا۔ خواتین نے ڈکٹیٹرشپ کے دوران جمہوریت کے لئے تاریخی قربانیاں دیں، جیل اور تشدد برداشت کیا۔ انہوں نے کہا کہ محترمہ بینظیر بھٹو شہید نے ہمیشہ خواتین کے ساتھ امتیازی سلوک کے خلاف بھرپور آواز بلند کی۔ انہوں نے خواتین پولیس اسٹیشن، فرسٹ ویمن بینک قائم کئے اور ہر ادارے میں خواتین کا کوٹہ مقرر کیا تاکہ خواتین ملکی امور میں بھرپور کردار ادا کریں۔ آصف علی زرداری نے کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی نے بےنظیر انکم سپورٹس پروگرام کے ذریعے خواتین کی تنگ دستی اور محرومی کو ختم کرنے کے لئے اقدامات اٹھائے۔ آصف علی زرداری نے کہا کہ ضرورت اس بات کی ہے کہ خواتین کو ریاست میں مساوی حقوق دے کر ملک کی خدمت کرنے کے لئے اپنی صلاحیتوں کو بروئے کار لانے کے لئے موقع فراہم کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست کی ذمے داری ہے کہ وہ خواتین کو ہر شعبے اور ریاستی امور میں کام کرنے کے وسائل فراہم کرے۔

 

 

 

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے پارٹی رہنما و سابق وفاقی وزیر شہید شہباز بھٹی کو ان کی آٹھویں برسی کے موقعے پر شاندار الفاظ میں خراج عقیدت پیش کیا ہے۔

  پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے پارٹی رہنما و سابق وفاقی وزیر شہید شہباز بھٹی کو ان کی آٹھویں برسی کے موقعے پر شاندار الفاظ میں خراج عقیدت پیش کیا ہے۔ اپنے پیغام میں پی پی پی چیئرمین نے کہا کہ شہید شہباز بھٹی ایک متحرک عوامی رہنما تھا، جو زندگی بھر معاشرے میں دلوں کو جوڑنے کے لیئے سرگرم عمل رہا۔ انہوں نے مزید کہا کہ شہید شہباز بھٹی نے شہید ذوالفقار علی بھٹو کے نظریئے، شہید محترمہ بینظیر بھٹو کے فلسفے اور سابق صدر آصف علی زرداری کی مفاہمتی پالیسی کے تحت ملک میں مذہبی آہنگی پر کام کیا اور اسی جرم کی پاداش میں انسانیت دشمن قوتوں نے انہیں شہید کردیا۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ آج شہید شہباز بھٹی جسمانی طور ہم میں موجود نہیں، لیکن اس کا برابری و رواداری پر قائم معاشرے کا خواب اور مشن سلامت ہے۔ پاکستان پیپلز پارٹی شہداءکے مشن کو پایہ تکمیل تک پہنچائے گی۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پاکستان کو مساوات پر مبنی ترقی پسند معاشرہ اور جمہوری ملک بننے سے دنیا کی کوئی طاقت نہیں روک سکتی۔