کراچی (23 مارچ 2019) پاکستان پیپلز پارٹی سندھ نے کراچی سے گڑھی خدابخش بذریعہ ریل ‘کاروانِ بھٹو’ کا حتمی شیڈیول جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ چیئرمین بلاول بھٹو زرداری 26 مارچ کی صبح کراچی سے اپنے سفر کا آغاز کریں گے اور 27 مارچ کی شام لاڑکانہ پہنچیں گے، جبکہ کارکنان و عوام راستے میں آنے والے ریلوے اسٹیشنز پر اپنے محبوب چیئرمین کا والہانہ استقبال کریں گے۔ پی پی پی سندھ کے صدر نثار احمد کھڑو، سابق وزیراعلیٰ سید قائم علی شاہ، وقار مہدی، راشد ربانی، سریندر ولاسائی، نوید انتھونی اور نعمان شیخ نے میڈیا سیل بلاول ہاوَس میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پارٹی کے بانی چیئرمین شہید ذوالفقار علی بھٹو کا 40 واں یومِ شہادت انتھائی عقیدت و احترام سے منایا جائیگا اور ملک بھر سے لاکھوں جیالے گڑھی خدابخش جمع ہوکر خراج عقیدت پیش کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ فضائی راستے بند ہونے کی وجہ سے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے بذریعہ ٹرین گڑھی خدابخش جائیں گے، اس سفر کا نام ‘کاروانِ بھٹو’ رکھا گیا ہے اور مذکورہ فیصلے کے بعد کارکنان میں خوشی کی لہر دوڑ گئی ہے۔ پریس کانفرنس کے دوران صحافیوں کے مختلف سوالات کے جواب دیتے ہوئے نثار احمد کھڑو نے واضح کیا کہ 26 مارچ سے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا شروع ہونے والا کاورانِ بھٹو کوئی احتجاجی مارچ نہیں ہے، اگر مارچ کرنے کی ضرورت ہوئی تو اس کے متعلق کوئی بھی فیصلہ فقط پارٹی کرے گی۔ ایک سوال کے جواب میں قائم علی شاہ نے کہا کہ حکومت کی جانب سے پارٹی پر دباوَ ڈالنے کے لیئے مختلف حربے استعمال کیئے جا رہے ہیں، لیکن پاکستان پیپلز پارٹی ماضی میں بھی اس طرح کے ہتھکنڈوں کا سامنا کرتی رہی ہے۔